میر جعفر اور میر صادق کو غدار کیوں کہا جاتا ہے؟ ایک انسان کی غداری اور دو سو سالہ غلامی

میر جعفر اور میر صادق کو غدار کیوں کہا جاتا ہے؟ ایک انسان کی غداری اور دو سو ...
میر جعفر اور میر صادق کو غدار کیوں کہا جاتا ہے؟ ایک انسان کی غداری اور دو سو سالہ غلامی
سورس: Wikimedia Commons

  

غدار۔۔۔ ایک ایسا لفظ ہے جس کو سنتے ہی پاکستانیوں کے ذہن میں دو نام آتے ہیں،  میر جعفر اور میر صادق ۔۔ آج تک آپ نے ہمیشہ میر جعفر کا نام پہلے اور میر صادق کا بعد میں ہی سنا ہوگا، اس کی وجہ کیا ہے، میر جعفر کون تھا، اس نے کیا غداری کی ؟ اور اس نے کس طرح ہندوستان پر انگریز کے قبضے کی راہ ہموار کی ؟ آج کی اس ویڈیو میں ہم اسی بارے میں بات کریں گے۔۔۔ ویڈیو کو آگے بڑھانے سے پہلے ، اگر آپ نے ابھی تک ہمارا ڈیلی پاکستان ہسٹری کا چینل سبسکرائب نہیں کیا تو جلدی سے اسے سبسکرائب کرلیں اور گھنٹی کے بٹن پر کلک کرنا نہ بھولیں تاکہ آپ کو ہماری ہر آنے والی ویڈیو کی بروقت خبر ملتی رہے۔۔۔

ناظرین ۔۔۔  میر جعفر کا پورا نام  میر جعفر علی خان بہادر تھا جو متحدہ ہندوستان کی ریاست متحدہ بنگال میں غداری کے ذریعے نواب بنا، ہم نے متحدہ بنگال اس لیے کہا ہے کہ ہندوستان کی بھی تقسیم سے پہلے بنگال کو  دو حصوں میں تقسیم کیا گیا تھا، ایک بنگال پاکستان کے حصے میں آیا جو آج بنگلہ دیش  بن چکا ہے جب کہ دوسرا بنگال جسے مغربی بنگال کہتے ہیں وہ آج بھی بھارت کی اہم ترین ریاست ہے۔

میر جعفر کے دادا سید حسین طبا  طبائی عراق کے شہر نجف سے ہجرت کرکے مغل بادشاہ اورنگزیب کی دعوت پر دلی آئے اور قاضی  مقرر ہوئے،  طباطبائی نے اورنگزیب کی بھتیجی سے شادی کی ، میر جعفر کی پھوپھی بنگال کے نواب علی وردی خان کی اہلیہ تھیں۔ نواب علی وردی خان کے نواسے سراج الدولہ بعد میں بنگال کے نواب بنے اور انہی کے ساتھ میر جعفر نے غداری کی تھی۔

میر جعفر نے نواب علی وردی خان کی فوج میں شمولیت اختیار کی  اور تیزی سے ترقی کی منازل طے کرتا چلا گیا، وہ نواب کے اتنا قریب ہوگیا کہ اس نے علی وردی کی بہن سے شادی کرلی، جس کے بعد اسے بنگال کی فوج کا سپہ سالار تعینات کردیا گیا۔ نواب علی وردی خان کی وفات کے بعد ان کے نواسے سراج الدولہ بنگال کے نواب بن گئے لیکن میر جعفر کی ہوس کی کوئی حد نہیں تھی، اس نے خود بنگال کا تخت حاصل کرنے کیلئے سازشیں شروع کردیں اورتاجِ برطانیہ کے ساتھ خفیہ معاہدہ کرلیا،  میر جعفر نے برطانوی فوج کے لیفٹیننٹ کرنل رابرٹ کلائیو کے ساتھ خفیہ ڈیل کی جس کے تحت برطانوی فوج نے پلاسی کے مقام پر نواب سراج الدولہ پر حملہ کرنا تھا اور یہیں پر میر جعفر نے اپنا اصلی رنگ ظاہر کرنا تھا،

ہم نے نصاب کی کتابوں میں بھی پڑھ رکھا ہے کہ سنہ 1757 میں پلاسی کے مقام پر جنگ ہوئی جس کو تاریخ میں جنگِ پلاسی کے نام سے یاد کیا جاتا ہے، اسی جنگ میں میر جعفر نے غداری کی، جنگ کیلئے میدان سجا تو برطانوی فوجیوں کی تعداد صرف تین ہزار تھی جب کہ نواب سراج الدولہ کے پاس 50 ہزار کی تگڑی سپاہ تھی لیکن میر جعفر کی غداری کے باعث نواب کو یہاں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔اس حوالے سے مکمل تفصیل جاننے کیلئے ڈیلی پاکستان ہسٹری کی یہ ویڈیو دیکھیں۔

ہماری مزید تاریخی اور دلچسپ ویڈیوز دیکھنے کیلئے "ڈیلی پاکستان ہسٹری" یوٹیوب چینل سبسکرائب کریں

مزید :

ڈیلی بائیٹس -