پاکستان ڈرون طیاروں سے بھارت کی جاسوسی کررہاہے: بھارتی اخبار کا واویلا

پاکستان ڈرون طیاروں سے بھارت کی جاسوسی کررہاہے: بھارتی اخبار کا واویلا
پاکستان ڈرون طیاروں سے بھارت کی جاسوسی کررہاہے: بھارتی اخبار کا واویلا

  

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی میڈیا نے الزام لگایاہے کہ پاکستان ڈرون ٹیکنالوجی کی مدد سے بھارت کی جا سوسی کر رہا ہے، جاسو س طیارے راجھستان میں بھارتی فوج کی سرگرمیوں پر مامور ہیں جبکہ حالیہ دنوں میں جاسوس طیاروں کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگیاہے ۔ ’ٹائمز آف انڈیا‘ کے مطابق پاکستان ڈرونز طیاروں کی مدد سے بھارت کے سرحدی علاقوں کی نگرانی کررہا ہے،رات میں چمک دار روشنی دکھاتے اور دوران پرواز اپنے پیچھے دھواں چھوڑ تے ان پاکستانی ڈرون کو دیکھاجا سکتا ہے۔ رپورٹ میں دعویٰ کیاگیاکہ پاکستانی جاسوس طیارے باڑمیر، جئے سالمر،بیکانر اور راجستھان میں گنگانگر کی سرحد پر سرگرم ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا کہ پاکستان چند سال سے امریکہ اور اٹلی کی مدد سے ڈرون تیار کر رہا ہے اور انہیں بھارتی علاقے پر جاسوسی کے لئے استعمال کررہا ہے۔ یہ طیارے بین الاقوامی سرحد سے صرف 500 سے700 گز کے فاصلے پر 15سو سے2ہزار میٹر کی اونچائی پر سرگرم ہیں۔ان ڈرونز پر الٹرا ماڈرن کیمرے نصب ہیں جو کئی کلومیٹربھارتی علاقے کی تصاویر لے سکتے ہیں جبکہ انہیں25سے 30کلومیٹر کی دوری سے آپریٹ کیا جا رہا ہے۔ اخبار نے پاکستانی ڈرون کی ساخت اور صلاحیت پر اپنی رپورٹ میں لکھا کہ ایک پاکستانی کمپنی کی طرف سے ”ڈرو ن جاسوس“ تیار کیا گیا ہے ، 20کلوگرام وزنی یہ ڈرون180کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے پرواز کرسکتا ہے اور بیٹری بیک اپ کے ساتھ یہ مسلسل 4 سے 5گھنٹے پرواز کر سکتا ہے۔اخبار لکھتا ہے کہ پاک فضائیہ نے2004میں ڈرون حاصل کرلیے تھے لیکن انہیں کئی تجرباتی مراحل کے بعد 2009ءمیں استعمال میں لایا گیا۔اس سے قبل2003ءمیں پاکستان نے اٹلی سے ڈرون خریدے تھے۔اخبار کے مطابق بھارتی وزارت دفاع کے ترجمان کرنل ایس ڈی گوسوامی سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایاکہ ہماری فضائی دفاعی یونٹس سرحد کے ساتھ ساتھ اس طرح کی سرگرمیوں کی نگرانی کر رہے ہیں اگر فضائی خلاف ورزی ہوئی تو کارروائی کی جائے گی،ہر ملک کے ساتھ قائم طریقہ کار اور مقررہ چینلز کے ذریعے ایسی تشویش کو اٹھایا جاتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں