سام سنگ اور یونیسکوکے درمیان پہلی عالمی شراکت داری کا اعلان

سام سنگ اور یونیسکوکے درمیان پہلی عالمی شراکت داری کا اعلان

لاہور (پ ر) سام سنگ الیکٹرانکس اوریونیسکو نے ترقی پذیردنیا میں طلبہ کو بہترتعلیم تک رسائی دینے کیلئے باہمی شراکت داری کا اعلان کیا ہے جس کیلئے اس شعبہ میں یونیسکوکی مہارت اور سام سنگ سمارٹ سکول کی سہولیات اور سلوشنزکو باہم یکجا کرکے بروئے کارلایا جائے گا۔یہ شراکت داری تعلیم، ثقافت ،نیچرل سائنسز ، سماجی اور انسانی علوم ، مواصلات اور معلومات کے حوالے سے یونیسکو کے پانچ بڑے پروگراموںکوبراہ راست سپورٹ کرتا ہے۔سام سنگ کے ایگزیکٹو نائب صدرسیوک پل کم (Seok Pil Kim)اور یونیسکو کے ڈائریکٹر جنرل ارینا (Irina Bokova) نے گزشتہ روز یہاں گلوبل ایجوکیشن اینڈ سکلزفورم میں باضابطہ طورپر معاہدے پر دستخط کئے ۔سام سنگ کے ایگزیکٹو نائب صدرسیوک پل کم کا کہنا تھا کہ سام سنگ میں ہم تعلیم کواس حیثیت میں دیکھتے ہیں جو تمام قوموں کوان کے پائیدار اور مضبوط معاشرے کی تعمیر کےلئے ان کی صلاحیتوں کا احساس دلانے کے قابل بناتی ہے ۔

 تعلیم اور ثقافت کے لئے سام سنگ اور یونیسکو کا مشترکہ نقطہ نظردنیا بھرمیںکمیونٹیزکوبامقصد خدمات کی شراکت داری یقینی بنانے اور انھیں اپنے مستقبل کی ذمہ داریاں لینے کے لئے نوجوان لوگوں کی حوصلہ افزائی کرے گا ۔سام سنگ الیکٹرانکس سام سنگ سکولوں سمیت مختلف اقدامات کے ذریعے ایک بہتر عالمی کمیونٹی کیلئے کردار ادا کرنے کے لئے پرعزم ہے۔ یونیسکو کے موبائل سیکھنے کے اقدامات موبائل آلات کے ذریعے سیکھنے کے عمل کی حمایت کے لئے سمارٹ راہوں کی پیشکش سب کیلئے تعلیم فراہم کرنے کی کوشش ہے۔یہ منصوبہ سام سنگ اوریونیسکوکو تعلیم کے شعبے میں تعاون اور ٹھوس پیش رفت کے قابل بنائے گا اور بشمول ثقافت اور سائنس کو مزید توسیع دے گا ۔یونیسکو کے ڈائریکٹر جنرل ارینا بوکووا نے کہا ہے کہ یونیسکو اور سام سنگ کے درمیان معاہدہ اختراعی اتحاد کی روشن مثال ہے جس کی ہمیں 21 صدی میں نالج سوسائٹی کی بنیادوں کو مضبوط بنانے کے لئے ضرورت ہے۔

مزید : کامرس