پاکستان اور فن لینڈ کے درمیان تعلقات کا فروغ اولین ترجیح ہے

پاکستان اور فن لینڈ کے درمیان تعلقات کا فروغ اولین ترجیح ہے

فیصل آباد (بیورورپورٹ) فن لینڈ کے سفیر راو¿لی سیکنان نے کہا ہے کہ پاکستان اور فن لینڈ کے درمیان تعلقات کا فروغ ان کی اولین ترجیح ہے اور اس سلسلہ میں بہت جلد پاک فن لینڈ بزنس سمٹ ہو گی ۔ وہ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے جس میں تاجروں صنعتکاروں اور کاروباری افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ اکتوبر 2012 ءمیں پاکستان میں فن لینڈ کا سفارتخانہ مالی حالات کی وجہ سے بند کر دیا گیا تھا تاہم وہ بطور رولنگ سفیر خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ تیسری دفعہ پاکستان آئے ہیں تاہم یہ پہلی دفعہ ہے کہ وہ فیصل آباد چیمبر کا دورہ کر رہے ہیں جس کا مقصد تجارتی تعلقات کے ساتھ ساتھ ثقافتی تعلقات کو فروغ دینا ہے۔ انہوں نے خاص طور پر کہا کہ اس کا کریڈٹ دونوں ملکوں کی میوزیم ایسوسی ایشنوں کو جاتا ہے جن کے درمیان دو طرفہ کیلئے مفاہمتی یاد داشت پر دستخط کئے جا چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ برس پاکستان نے 3.6 فیصد کی شرح سے ترقی کی جو کہ ہماری توقعات سے کہیں زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی سرگرمیوں میں اضافہ کے پیش نظر پاکستان اور فن لینڈ میں دو طرفہ سرمایہ کاری کا معاہدہ اس سال ہو چکا ہے۔ ہم دونوں حکومتوں کے درمیان مفاہمت کی ایک یاد داشت پر بھی دستخط کر رہے ہیں جس کے تحت اسلام آباد اور سیلسنکی میں سیاسی تعلقات کو مزید بہتر بنانے کیلئے کام ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ فن لینڈ کی دو کمپنیاںپاکستانی مین مارکیٹس کا سروے بھی کر رہی ہیں جس کے بعد کراچی اور لاہور میں صنعتیں بھی قائم کی جائینگی۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت فن لینڈ کے 2 اعزازی قونصلر کام کر رہے ہیں۔

 فی الحال تیسرا اعزازی قونصلر اسلام آباد میں مقرر کیاجائیگا جس کے بعد فیصل آباد میں قونصلر تعینات کرنے کے بارے میں سوچا جائیگا۔ اس سے قبل فیصل آباد چیمبر کے صدر انجینئر سہیل بن رشید نے چیمبر کے مقاصد ، ذمہ داریوں ، کردار اور کامیابیوں پر روشنی ڈالی اور بتایا کہ چیمبر کے 4500 ممبران فیصل آباد کی صنعتی تجارتی اور کاروباری ترقی کے ساتھ ساتھ فیصل آباد شہر کے مسائل حل کرنے کے علاوہ سماجی، فلاحی اور خیراتی کاموں میں بھی بھرپور حصہ لے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ فیصل آباد ملک کا تیسر ا بڑا شہر ہے جبکہ محصولات کی ادائیگی میں یہ دوسرے نمبر پر ہے اسے ٹیکسٹائل کی صنعت کی وجہ سے ملکی بلکہ عالمی سطح پر بھی جانا جاتاہے۔ ٹیکسٹائل کی برآمدات سے حاصل ہونے والی 13 ارب ڈالر کی آمدن میں 6 ارب ڈالر کا حصہ اس شہر کی صنعتوں کا ہے۔ سیاسی کاروباری کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ فیصل آباد چیمبر نے حال میں ہی گورنر ہاو¿س لاہور میں ایک مفاہتمی یادداشت پر دستخط کئے ہیں جس کے تحت فیصل آباد میں پینے کے صاف پانی کے پلانٹ لگائے جائیں گے۔ اسی طرح فیصل آباد چیمبر کو ملک کی پہلی اور سب سے بڑی ڈرائی پورٹ اور اب 4500 ایکڑ پر محیط انڈسٹریل ایسٹیٹ ، ایم تھری موٹروے کا بھی اعزاز حاصل ہے۔ انہوں نے جی ایس پی پلس کے درجہ کے حصول کیلئے فن لینڈ کی حمایت کا شکریہ ادا کیا اور بتایا کہ فیصل آباد کے تاجروں کو اس سہولت سے آگاہی دینے کیلئے چیمبر کے شعبہ ریسرچ اینڈڈویلپمنٹ میں جی ایس پی پلس سیل قائم کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور فن لینڈ کے درمیان دو طرفہ تعلقات کے فروغ کیلئے وفود کے تبادلوں کی بھی اشد ضرورت ہے جبکہ ہم ایک دوسرے ملک میں نمائشوں کا بھی اہتمام کر سکتے ہیں۔ اس موقع پر مہمانوں کا فیصل آباد چیمبر کے بارے میں ملٹی میڈیا کے ذریعے تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا جبکہ لائلپور میوزیم کے ڈائریکٹر مسٹر عتیق نے اس شعبہ میں فن لینڈ سے تعاون کے بارے میں بتایا۔ سوال و جواب کی نشست میں چیمبر کے سابق صدور، میاں زاہد اسلم، میاں جاوید اقبال، مزمل سلطان، فرحان لطیف، ایوب صابر کے علاوہ ریحان نسیم بھراڑہ ، مسز نوشابہ اور ڈاکٹر حبیب اسلم گابا نے بھی حصہ لیا۔ نائب صدرچےمبرچوہدری محمداصغرنے مہمانوںکاشکرےہ ادا کےا بعدمیں فن لینڈ کے سفیر اور دیگر مہمانوں کو چیمبر کی اعزازی شیلڈیں پیش کی گئیں۔ اس موقع پر تحائف کا تبادلہ کیا گیا۔

مزید : کامرس