مقبوضہ کشمیر میں سی آر پی ایف اہلکاروں نے صحافیوں کو انسانی ڈھال کے طورپر استعمال کیا

مقبوضہ کشمیر میں سی آر پی ایف اہلکاروں نے صحافیوں کو انسانی ڈھال کے طورپر ...

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیںاحتجاجی مظاہروں کی کوریج کرنے والے صحافیوں نے کہا ہے کہ بھارتی سینٹرل ریزروپولیس فورس نے کشمیری نوجوان فرحت ڈار کے قتل کے خلاف حاجن قصبے میں احتجاجی مظاہرے کے دوان ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا اور انہیں انسانی ڈھال کے طورپر استعمال کیا۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق صحافیوں کا کہنا تھا کہ وہ طالب علم کے قتل کے خلاف علاقے میں ہونے والے زبردست احتجاجی مظاہرے اور جھڑپوںکی کوریج کر نے کیلئے جا رہے تھے اور جب وہ حاجن پل کے قریب پہنچے تو وہاں تعینات سی آر پی ایف کی 45بٹالین کے اہلکاروں نے انہیں روک دیا اور ان کے ساتھ بدتمیزی کی۔

 انہوں نے کہاکہ انہوںنے 5میں سے ہمارے تین ساتھیوں کو انسانی ڈھال کے طورپر استعمال کیا اور ایسا کرتے وقت وہ کہہ رہے تھے اب احتجاجی مظاہرے کی کوریج کرو۔ انہوںنے بتایا کہ اہلکاروںنے ان کے کیمروں سے فوٹویں بھی ڈیلیٹ کر دیں۔ صحافیوں نے بتایا کہ بھارتی پولیس اہلکاروںنے دس منٹ تک انہیں یرغمال بنائے رکھا اور ان کے کندھوں پر اپنی بندوقیں رکھ کر وہ مظاہرین پر جوابی پتھراﺅںکرتے رہے۔

مزید : عالمی منظر