نظر چیک کروانے کےلئے ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت نہیں

نظر چیک کروانے کےلئے ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت نہیں
نظر چیک کروانے کےلئے ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت نہیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کیلیفورنیا (مانیٹرنگ ڈیسک) اب بہت جلد آپ کو اپنی نظر کا معائنہ کرانے کے لئے ڈاکٹر کے پاس جانے اور قطار میں کھڑے ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ سٹنفورڈ یونیورسٹی کے ریسرچرز کا کہنا ہے کہ ان کے تیار کردہ آڈاپٹر کے ذریعے یہ کام ایک سمارٹ فون سے بھی لیا جاسکتا ہے۔ یونیورسٹی کے پروفیسر رابرٹ چانگ کے مطابق ان کا تیار کردہ آڈاپٹر آنکھوں کے لئے انسٹاگرام کی طرح ہے اور بہت جلد یہ کمرشل سطح پر صارفین کو میسر ہوگا۔ ان کا کہنا ہے کہ اس مقصد کے لئے استعمال ہونے والی مشینری کی قیمت ہزاروں ڈالر ہے جبکہ انتظار کی تکلیف اور ڈاکٹر کی موجودگی ضروری ہونا جیسے مسائل بھی ہیں۔ ان کے تیار کردہ آڈاپٹر کی قیمت صرف چند سو ڈالر ہوگی اور کوئی بھی اسے سمارٹ فون پر لگاکر نظر چیک کرسکے گا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی