تھر کا المیہ سندھ حکومت کی غفلت اور لاپرواہی کا منہ بولتا ثبوت ہے ‘ امجد خالق

تھر کا المیہ سندھ حکومت کی غفلت اور لاپرواہی کا منہ بولتا ثبوت ہے ‘ امجد خالق
 تھر کا المیہ سندھ حکومت کی غفلت اور لاپرواہی کا منہ بولتا ثبوت ہے ‘ امجد خالق

  

لاہور(بزنس رپورٹر) صحرائے تھر کا المیہ ہماری حکومتوں خاص کر پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت کی غفلت اور لاپرواہی کا منہ بولتا ثبوت ہے صحرائے تھر میں ماتحت حکومتی اداروں نے جب نومبر ہی میں حکومت سندھ کو بروقت خطرے سے آگاہ کردیاتھا تو سندھ حکومت نے قحط سالی سے عہدہ براءہونے کے لئے مو¿ثر اقدامات کیوں نہیں کئے ایک طرف بھوک بھیاک عفریت کا روپ دھار کر انسان و حیوان کو ہڑپ کرنے کی تیاری کررہی تھی تو دوسری طرف سندھ حکومت سندھ فیسٹیول کی بھول بھلیوں میں گم تھی ان خیالات کااظہار دبئی میں مقیم ممتاز پاکستانی بزنس مین اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما محمد امجد خالق نے روزنامہ پاکستان سے ٹیلی فونک انٹرویو میں کیا انہوں نے کہا کہ پاکستان میں صحرائے تھر کا قحط پاکستان یادنیا میں پہلی بار نہیں ہوا دنیا میں بے شمار ملکوں میں خشک سالی آتی رہتی ہے لیکن وہاں کی حکومتیں عوام کی تکلیفوںاور دکھوں کا بروقت احساس کرکے مو¿ثر اقدامات کرتی ہیں تاکہ خشک سالی قحط کی وجہ نہ بن جائے اب اگر سندھ حکومت کے ماتحت ادارے صوبائی حکومت کو بروقت خطرے کی نشاندہی کرچکے تھے تو بروقت اقدامات کیوں نہیں کئے گئے خشک سالی کو کیوں انسانی المیے میں تبدیلی کیاگیا اب سینکڑوں انسانوں اور جانوروں کی قیمتی جانوں کا ذمہ دار کون ہے ۔

امجد خالق نے کہا کہ اگر صحرائے تھر میں بارشوں کا متبادل نظام کام کررہا ہوتا تو خشک سلی کبھی بھی قحط سالی میں تبدیل نہ ہوتی تمام فلاحی اداروں اور سیاسی جماعتوں کو بلاتفریق اس انسانی المیے میں مبتلا افراد کی مدد کرنی چاہیے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4