ملائیشیاءکا لاپتہ طیارہ رابطہ ختم ہونے کے 6منٹ بعد تھائی فوجی ریڈار پر دیکھا گیا

ملائیشیاءکا لاپتہ طیارہ رابطہ ختم ہونے کے 6منٹ بعد تھائی فوجی ریڈار پر ...

                                                          کوالالمپور/بنکاک/واشنگٹن/بیجنگ (اے این این)ملائیشیاءکالاپتہ مسافر طیارہ رابطہ ختم ہونے کے 6منٹ بعد مختلف روٹ پر تھائی فوجی ریڈار پر دیکھا گیا ، کوئی غیر معمولی پیغام یا اطلاع ارسال نہیں کی گئی، تھائی لینڈ نے لاپتہ طیارے سے متعلق نئی معلومات جاری کردیں،ادھر امریکہ نے کہاہے کہ طیارے میں موجود کسی مشکوک شخص نے ممکنہ طور پر کمپیوٹر سسٹم کی مدد سے طیارے کا راستہ تبدیل کیا جبکہ ملائیشین حکام کے مطابق نائب پائلٹ فارق عبدالحمید نے طیارے کے غائب ہونے سے چند لمحوں پہلے آرام سے کہا کہ ٹھیک ہے، شب بخیر ، ادھر طیارے کی بین الاقوامی تلاش مہم کے ساتھ ساتھ چینی حدود میں علیحدہ سے بھی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔ منگل کو تھائی لینڈ کے حکام کی طرف سے ملائیشیاءکے لاپتہ طیارے سے متعلق نئی معلومات جاری کی گئیں جن میں کہا گیا ہے کہ لاپتہ طیارے سے معمول کی اطلاعا ت ملی تھیں،کوئی غیر معمولی پیغام یا اطلاع ارسال نہیں کی گئی۔جہاز رابطہ ختم ہونے کے 6منٹ بعد مختلف روٹ پر تھائی فوجی رڈار پر دیکھا گیا تھا تاہم ہمیں طیارے کے لاپتہ ہونے اور مقررہ روٹ سے ہٹنے کا علم نہیں ہو سکا ۔ ادھر امریکہ نے کہا کہ طیارے میں موجود کسی مشکوک شخص نے ممکنہ طور پر کمپیوٹر سسٹم کی مدد سے طیارے کا راستہ تبدیل کیا امریکی اخبار کی رپورٹ کے کے مطابق واشنگٹن میں سینئر حکام نے بتایا کہ گمشدہ طیارے کا رخ طے شدہ راستے سے ہٹا کر مغرب کی طرف موڑنے کا کام کمپیوٹر پروگرام کے ذریعے کیاگیا، یہ کام کرنے والا شخص کاک پٹ میں ہی موجودتھا اور طیاروں کے سسٹمز سے بخوبی آگاہ تھا۔کاک پٹ میں موجودشخص نے طیارے کا رخ موڑنے کے لیے کی بورڈ کی 7 سے 8کیز استعمال کیں ،تاہم ابھی یہ نہیں کہا جاسکتا کہ طیارے کے فلائٹ پروگرام میں تبدیلی اس کے روانہ ہونے سے پہلے کی گئی یا بعد میں ، امریکی حکام کے دعووں سے ملائیشین حکام کے ان خدشات کو تقویت ملی ہے کہ طیارے کا رخ جان بوجھ کر تبدیل کیاگیا ۔ دوسری جانب ملائیشیا ایئر لائنز کے چیف ایگزیکٹیو احمد جوہری یاحی نے پیر کو ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ ابتدائی تحقیقات میں بات سامنے آئی ہے کہ نائب پائلٹ فارق عبدالحمید نے طیارے کے غائب ہونے سے چند لمحوں پہلے آرام سے کہا کہ ٹھیک ہے، شب بخیر۔ تاہم یہ واضح نہیں کہ یہ آخری الفاظ طیارے کا ٹریکنگ ڈیوائس یا پتہ بتانے والا آلہ بند کرنے سے پہلے کہے گئے یا اسے بند کرنے کے بعد میں۔ حکام کو یقین ہے کہ طیارے کے مواصلاتی نظام کو دانستہ طور پر بند کیا گیا تھا۔ پولیس نے طیارے کے کپتان 53 سالہ زہری شاہ اور 27 سالہ فارق کے گھروں کی تلاشی لی ہے۔حکام کے مطابق پولیس کپتان کے گھر سے پرواز جیسی کیفیت پیدا کرنے والی مشین یا فلائٹ سیمولیٹر کو اپنے ہیڈ کوارٹر لے گئی ہے جہاں انھوں نے اس کامعائنہ کیا۔ دریں اثناء ملائیشیا کے لاپتا طیارے کے لیے بین الاقوامی تلاش مہم کے ساتھ ساتھ چینی حدود میں علیحدہ سے بھی تلاش شروع کر دی ہے۔چین کے سرکاری میڈیا کے مطابق طیارے کی تلاش کے کام کا دائرہ بڑھادیا گیا ہے اور اب اس طیارے کو ملکی حدود میں بھی ڈھونڈا جارہا ہے۔ اس کام کے لیے اکیس سیٹلائیٹ کی مددلی جارہی ہے۔چین کی حکومت کا یہ بھی کہنا ہے کہ تمام چینی مسافروں کی جانچ پڑتال کر کے یہ نتیجہ نکالا گیا ہے کہ ان میں سے کسی کا بھی دہشتگرد تنظیم سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ واضح رہے کہ ملائیشیا ایئر لائنز کی پرواز ایم ایچ 370 گذشتہ جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب کوالالمپور سے بیجنگ کے سفر کے دوران غائب ہوئی تھی اور اس کا ابھی تک کوئی سراغ نہیں ملا ہے۔اس لاپتہ طیارے پر 239 افراد سوار تھے جن میں سے بیشتر چینی تھے۔ اس طیارے نے آخری مرتبہ ایئر ٹریفک کنٹرول سے ملائیشیا کے مشرق میں بحیر جنوبی چین کی فضائی حدود میں رابطہ کیا تھا لیکن اس کے غائب ہونے کے سات گھنٹے بعد بھی طیارے سے سیٹیلائٹ کو خودکار طریقے سے سگنل ملتے رہے۔ لاپتا ہونے والے مسافر طیارے کی تلاش کے لیے وسیع پیمانے پر آپریشن جاری ہے جس میں 26 ممالک حصہ لے رہے ہیں۔

مزید : صفحہ اول