نئے چیف الیکشن کمشنر کے نام پر وزیراعظم سے رابطہ نہیں ہوا ، خورشیدشاہ

نئے چیف الیکشن کمشنر کے نام پر وزیراعظم سے رابطہ نہیں ہوا ، خورشیدشاہ

اسلام آباد(اے این این)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ نئے چیف الیکشن کمشنر کے نام پر ابھی میرے اور وزیراعظم کے درمیان رابطہ نہیں ہوا ، رانا بھگوان داس کے نام پر اتفاق نہیں ہو سکا تو کوئی متبادل نام دیں گے ، ڈیڑھ ارب ڈالر کے سعودی تحفے کو گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں لکھا جائے ، تحفے نے کئی سوالات کو جنم دیا ہے ،حکومت عوام کو اصل بات بتائے ، چوہدری نثار نے سانحہ کچہری پارلیمنٹ بعد عوام کو گمراہ کیا ، وہ اپنے بارے میں غور کے بعد کوئی فیصلہ کرلیں ، تھر کے ایشو پر سیاست چمکائی گئی ۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے منگل کی شام یہاں پارلیمنٹ ہاﺅس میں اپنے چیمبر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔خورشیدشاہ نے کہاکہ چیف الیکشن کمشنر کے نام پر ہفتہ پہلے اسحاق ڈار سے مشاورت ہوئی تھی ، میں نے تحریک انصاف سے بھی مشاورت کی تھی اور ایم کیوایم کو بھی اعتماد میں لیا تھا ، دونوں جماعتوں نے اپوزیشن کے نام کی حمایت کی تھی ، چوہدری شجاعت حسین کو بھی آن بورڈ لیا گیا تھا ، ہم غیر متنازعہ شخصیت کو سی ای سی کے عہدے پر لانا چاہتے ہیں ، نام کا معاملے ابھی وزیراعظم نواز شریف کے پاس ہے ۔انہوں نے کہاکہ ابھی میرا اور وزیراعظم کا رابطہ نہیں ہوا ، ہم انتظار کررہے ہیں ورنہ رانا بھگوان داس کے علاوہ بھی کسی نام پر غورکرسکتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف مخالفت برائے مخالفت کررہی ہے ، عمران خان خود پارلیمنٹ میں نہیں آتے ہیں ، نئے چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی کا معاملہ میرے اور وزیراعظم کے اتفاق رائے کے بعد پارلیمانی کمیٹی میں معاملہ جائے گا۔

خورشید شاہ

مزید : صفحہ آخر