شیخ علاﺅ الدین کا پارلیمانی سیکر ٹری کے تحریک التوائے کار کے جوابات دینے پر احتجاج

شیخ علاﺅ الدین کا پارلیمانی سیکر ٹری کے تحریک التوائے کار کے جوابات دینے پر ...

لاہور( سپیشل رپورٹر) پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں حکومتی رکن شیخ علاﺅ الدین نے پارلیمانی سیکر ٹری کی طرف سے تحریک التوائے کار کے جوابات دینے پر احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں سنجیدہ رویہ اختیار کرنا چاہیے اسمبلی میں متعلقہ صوبائی وزیر کی بجائے جو مرضی جواب دے دیتا ہے جس پر قائم مقام سپیکر نے انہیں سختی سے ٹوکتے ہوئے کہا کہ پارلیمانی سیکرٹری معزز رکن اسمبلی ہیں آپ کو اس طرح کے الفاظ استعمال نہیں کرنے چاہیے اس معاملے پر رولنگ زیر التواءہے اور میں رولنگ دوں گا ۔تحریک التوائے کار کے جواب میں گنے کے کاشتکاروں کو ادائیگیاں نہ ہونے کے جواب پر حکومت اور اپوزیشن نے احتجاج کیا اور کہا کہ وہ اسکے ثبوت پیش کر سکتے ہیں کہ ادائیگیاں نہیں ہو ر ہی ہیں ۔ شیخ علاﺅ الدین نے کہا کہ اگر ادائیگیاں کی جار رہی ہوئیں تو وہ مستعفی ہونے کے لئے تیار ہیں ۔ اس موقع پر اپوزیشن نے کمیٹی بنانے کا مطالبہ کیا تو شیخ علاﺅ الدین نے کہا کہ کمیٹیوں نے تو بیڑہ غرق کر دیا ہے ۔ قائم مقام سپیکر نے پارلیمانی سیکرٹری کو دوبارہ اس کا جائزہ لے کر اس کا جواب دینے کی ہدایت کی ۔شیخ علاﺅ الدین نے کہا کہ اگر اس کا جواب ترامیم کے ساتھ آیا تو پھر آپ ایکشن لیں گے جس پر سپیکر نے کہا کہ میں اس معاملے کو خود دیکھ رہا ہوں اور اگر ترامیم کے ساتھ جواب آیا تو سخت ایکشن لیا جائے گا ۔علا و ہ از ےں شیخ علاﺅ الدین نے اخبار ات کے کالموں میں ارکا ن اسمبلی کے کردار کو منفی انداز میں پیش کرنے پر احتجاج کرتے ہوئے اےوان میں اس ایشو پرتحریک استحقاق لانے کا اعلان کیا ہے قائم مقام سپیکر سردار شیر علی گورچانی نے کہا کہ آپ تحریک استحقاق لے آئیں مجھے اےوان کی عزت سب سے زیادہ عزیز ہے ۔ پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں مسلم لیگ (ن) کے رکن شیخ علاﺅ الدین نے ایک اخبار میں شائع ہونے والے کالم کی کٹنگ قائم مقام سپیکر سردارشیر علی گورچانی کو پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس میں لکھا ہے کہ ارکان اسمبلی جرائم او ربرائی کی جڑ ہیں اور نوکریاں بانٹتے ہیں حالانکہ ہم بے بس ہیں ہم ارکان اسمبلی اس تنقید کا اس لئے جواب نہیں دے سکتے کیونکہ ہمارے پاس پریس نہیں ہے انہوں نے سپیکر کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میری آپ سے درخواست ہے کہ آپ اس ایشو پرنوٹس لیں ۔ اس موقع پر وارث کلو اور ملک احمد اور دیگر ارکان بھی کھڑے ہو گئے اور اس ایشو پر احتجاج کیا ۔ جس پر قائم مقام سپیکر نے شیخ علاﺅ الدین سے کہا کہ آپ اس معاملے پر تحریک استحقاق لے کر آئیں گے مجھے اس ایوان کی عزت آپ سب سے زیادہ عزیز ہے جس پر شیخ علاﺅ الدین نے کہا کہ میں تحریک استحقاق لاﺅں گا اور پھر فیصلہ ہونا چاہیے ۔

شیخ علاﺅ الدین

مزید : صفحہ آخر