چین کی 32ارب ڈالر کی سرمایہ کاری سے تعلقات مزید مستحکم ہوں گے،شہباز شریف

چین کی 32ارب ڈالر کی سرمایہ کاری سے تعلقات مزید مستحکم ہوں گے،شہباز شریف

                                                                  لاہور(پ ر)وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہاہے کہ چین کے تعاون سے پاکستان میں سرمایہ کاری کا عمل تیزی سے جاری ہے ۔ عوامی جمہوریہ چین کی طرف سے پاکستان کی تاریخ میں 32 ارب ڈالر کی بڑی سرمایہ کاری سے ملک میں معاشی ترقی کے نئے دور کا آغاز ہوگا،دونوں ممالک کے تجارتی اوراقتصادی تعلقات مزےد مستحکم ہوں گے۔ حکومت ملک کو درپیش توانائی کا بحران تیز رفتاری سے حل کرنے کے لیے پر عزم ہے۔توانائی کے شعبے مےں سرمایہ کاروں کو تمام ممکنہ سہولتیں اور تحفظ فراہم کررہے ہیں ۔انہوں نے یہ بات چینی کمپنی چا ئنہ گریثوباگروپ کمپنیکے نمائندوںکے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔جس نے منگل کے روز ان سے اسلام آباد میں ملاقات کی - اس موقع پر سیکرٹری محکمہ معدنیات سبطین فضل حلیم بھی موجود تھے۔وزیر اعلیٰ محمد شہباز شرےف نے چےن کی کمپنی کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چےن اور پاکستان دوستی کے مضبوط بندھن مےں بندھے ہےں۔پاک چےن دوستی لازوال ہے اورپاکستان کے مختلف شعبوں کی ترقی مےں چےن کا تعاون لائق تحسےن ہے۔چےن مشکل کی ہر گھڑی مےں پاکستان کی حکومت اورعوام کے ساتھ کھڑا رہا ہے اور دونوں ممالک کے عوام مابےن باہمی احترام کا مضبوط رشتہ قائم ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو درپےش توانائی کے سنگےن بحران سے زراعت،صحت،تعلےم اورسماجی ترقی کے تمام شعبے بری طرح متاثر ہوئے ہےں۔پاکستا ن مسلم لےگ (ن) کی قےادت ملک کو توانائی کے بحران سے جلداز جلد نجات دلانے کے لےے دن رات اےک کئے ہوئے ہے۔انہوں نے کہا کہ چےن نے کوئلے کی بنےاد پر پاکستان مےں 20ہزار مےگاواٹ بجلی کے منصوبے لگانے کی پےش کش کی ہے اوراس پےش کش پرپوری طرح عملدر آمد کے نتےجے مےں ملک وقوم کو اندھےروں سے نکالنے مےں مدد ملے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کے لیے ساز گارماحول موجودہے اور حکومت کی طرف سے سرمایہ کاروں کواےک ہی چھت تلے ہر ممکن سہولتےںفراہم کی جا رہی ہیں ۔چےنی کمپنےاں ان سے فائدہ اٹھا کر توانائی سمےت دےگر شعبوں مےں سرماےہ کاری کرسکتی ہے۔انہوںنے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان محمد نواز شریف کی ہدایات پر ایسی پالیسیاں تشکیل دی گئی ہےں جن سے توانائی سمیت ان تمام دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کے مواقع فراہم کیے گئے ہیںجن کی اس وقت ملک وقوم کواشد ضرورت ہے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پانی اور بجلی کے وسائل کو ترقی دینے کے لیے عوامی جمہوریہ چین کے کئی اداروں سے بات چیت جاری ہے اوربعض منصوبوں پر کام بھی شروع ہو چکاہے اور ان منصوبوں کی تکمیل سے توانائی کی قومی ضروریات پوری کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تمام دستیاب وسائل اور متبادل ذرائع بروئے کار لا کر توانائی کے منصوبوں پر عمل درآمد کیا جا رہا ہے جس میں ہائیڈل، تھرمل ، سولر اور کوئلے ،گنے کی پھوک سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے شامل ہیں- انہوں نے کہا کہ چین کے تعاون سے نندی پور منصوبہ تکمیل کے قریب ہے جبکہ بہاولپور میںقائداعظم سولر پارک پر بھی کام جاری ہے - انہوں نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جارہاہے کہ جن سرمایہ کاروں کے معاہدے طے پارہے ہیں ان منصوبوں پرکام جلدازجلد شروع ہوسکے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اللہ تعالی نے پاکستان کو قدرتی معدنیات سے مالامال کیا ہے اور حکومت قدرتی وسائل اورمعدنیات کی تلاش کے لیے ہرممکن وسائل برﺅے کار لارہی ہے۔ملاقات کے دوران چینی کمپنی کے صدرہائی کائی نے وفد کے ہمراہ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے پنجاب میں پانی اور بجلی کے وسائل سے متعلق منصوبوں پر عمل درآمد کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا اورپنجاب میںقدرتی ومعدنی وسائل سے فائدہ اٹھانے سے متعلق مختلف منصوبوں کے آپسشنز پر بات چیت کی ۔انہوں نے کہا کہ ہم پنجاب حکومت کے ساتھ معدنی وسائل کی ترقی اورتوانائی کے شعبے مےں تعاون کرےں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے کہا ہے کہ ہائیڈل اور تھرمل کے علاوہ کوئلے اور سولرسے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے -قومی اور صوبائی سطح پر بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں کے لئے جامع پالیسی تشکیل دی گئی ہے جس میں بیرونی سرمایہ کاروں کے لئے ممکنہ مراعات ، سہولیات اور سرمایہ کاری کے تحفظ کے لئے لائحہ عمل وضع کیا گیا ہے - انرجی سمیت تعمیر و ترقی کے مختلف شعبوں میں ترک سرمایہ کاروں کی سرمایہ کاری کا خیرمقدم کرتے ہیں اور آنے والے دنوں میں ترکی اور پاکستان کے مابین سرمایہ کاری اور اقتصادی تعاون کو مزید فروغ حاصل ہوگا -وہ ےہاں ترکی کی توانائی کی سیول انرجی کمپنی کے تین رکنی وفد سے گفتگو کر رہے تھے جس نے اسلام آباد میں مسٹر کارگی سیانکا کی سربراہی میں ان سے ملاقات کی - سیول انرجی کمپنی سولرسے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوںمےں خاص مہارت رکھتی ہے- وزیراعلیٰ نے ترک کمپنی کے وفد سے بات چےت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں ہائیڈل اور تھرمل ذرائع سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے موجود ہیں لیکن گذشتہ سالوں کے دوران بجلی کا بحران پیدا ہونے کے بعد موجودہ حکومت نے برسراقتدار آتے ہی کوئلے ، سولر اور دیگر متبادل ذرائع سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر تیز رفتاری سے کام کا آغاز کیا- انہوں نے کہا کہ اس وقت بہاولپورمیں قائداعظم سولر پارک کے منصوبے پر کام جاری ہے اسی طرح بڑے شہروں میں سٹریٹ لائٹس کو سولر سسٹم پر منتقل کرنے کے لئے بھی جامع پروگرام تشکیل دیا گیا ہے - انہوں نے کہا کہ ترکی اور پاکستان کے درمیان قریبی تعلقات اور اقتصادی تعاون موجود ہے اور سولر انرجی سمیت سماجی ترقی کے شعبوں میں غیرملکی سرمایہ کاروں کو تمام ممکنہ سہولتیں فراہم کی جارہی ہے - انہوں نے کہا کہ سولر انرجی کے فروغ کےلئے سرمایہ کاروں کے لئے پنجاب میں بڑی گنجائش موجود ہے - سیول انرجی کمپنی کے وفد کے سربراہ مسٹر کارگی سیانکا نے اس موقع پر وزیراعلی سے گفتگو کرتے ہوئے سولر انرجی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کے لئے اپنی کمپنی کی دلچسپی کا اظہار کیا - انہوں نے کہا کہ سولر انرجی کے منصوبوں پر عمل درآمد کے لئے کمپنی پنجاب میں قابل عمل پراجیکٹس کا جائزہ لے گی - انہوں نے اس موقع پر سرمایہ کاروں کے لئے وفاقی اور پنجاب حکومت کی طرف سے سہولیات کی فراہمی کو سراہا-

مزید : صفحہ اول