کلمہ طیبہ کی بنیاد پر قوم کو متحدہ کر کے ہی فکری انتشار ختم کیا جا سکتا ہے،حافظ سعید

کلمہ طیبہ کی بنیاد پر قوم کو متحدہ کر کے ہی فکری انتشار ختم کیا جا سکتا ...

                                                     لاہور(اے این این )امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ کلمہ طیبہ کی بنیاد پر قوم کو متحد کرکے ہی معاشرے سے فکری انتشار ختم کیاجاسکتا ہے۔احیائے نظریہ پاکستان مہم کے کوئی سیاسی مقاصد نہیں‘فرقہ واریت، لسانیت اور قومیتوں کے جھگڑے ختم کرنے کیلئے قیام پاکستان والے جذبے پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔ بیرونی قوتیں نوجوان نسل کے دل و دماغ سے نظریہ پاکستان کو کھرچنے کی کوششیں کر رہی ہیں۔ 23مارچ کو لاہور سمیت پورے ملک میں نظریہ پاکستان مارچ، جلسوں اور کانفرنسوں کا انعقاد کریں گے۔ ملک بھر کی مذہبی، سیاسی و کشمیری قیادت کو ان پروگراموں میں شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔ وہ مرکز القادسیہ چوبرجی میں احیائے نظریہ پاکستان مہم کے سلسلہ میں اخبارات کے مدیران اورسینئر کالم نگاروں کے ساتھ ایک مشاورتی مجلس کے دوران گفتگو کر رہے تھے۔ اس موقع پر جماعةالدعوة سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ، مولانا سیف اللہ خالد، قاری محمد یعقوب شیخ، محمد یحییٰ مجاہد اور حافظ خالد ولید بھی موجود تھے۔ حافظ محمد سعید نے کہاکہ اس وقت ہر شخص ملک میں پھیلی ہوئی بدامنی، قتل و غارت گری، ٹارگٹ کلنگ اور دہشت گردی کی وارداتوں سے پریشان ہے۔ اسلام دشمن قوتیں منصوبہ بندی کے تحت مایوسیاں پھیلا رہی ہیں۔لوگوں کو وطن عزیز پاکستان کو درپیش ان مسائل کا کوئی حل نظر نہیں آرہا۔ ملک کو اس وقت اتحاد کی بہت زیادہ ضرور ت ہے۔کلمہ طیبہ ہی ایک ایسی بنیاد ہے جس پر مسلمان قیام پاکستان کے موقع پر متحد ہو ئے تھے اور آج بھی ایک پلیٹ فارم پر جمع ہو سکتے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ایک طرف حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات ہو رہے ہیں تو دوسری طرف بم دھماکوں کے ذریعہ وطن عزیز پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔پاکستان بناتے وقت لاکھوں مسلمانوںنے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کئے اور آزادی کے حصول کیلئے ایک قوم ‘ ایک وحدت بنے تھے جس کے نتیجہ میں پاکستان کے نام سے ایک الگ ملک معرض وجود میں آیا۔

مزید : صفحہ اول