ایک عادت جو اکثر پاکستانیوں میں پائی جاتی ہے لیکن دنیا بھر میں بہت بری سمجھی جاتی ہے، سائنسدانوں نے اس کا انتہائی ناقابل یقین فائدہ بتادیا

ایک عادت جو اکثر پاکستانیوں میں پائی جاتی ہے لیکن دنیا بھر میں بہت بری سمجھی ...
ایک عادت جو اکثر پاکستانیوں میں پائی جاتی ہے لیکن دنیا بھر میں بہت بری سمجھی جاتی ہے، سائنسدانوں نے اس کا انتہائی ناقابل یقین فائدہ بتادیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا بھر میں وقت کی پابندی کو قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے لیکن ہم پاکستانی ہر کام تاخیر سے کرنے میں یدطولیٰ رکھتے ہیں۔ ہم میں سے اکثر لوگ اپنی اس عادت پر پریشان ہوتے ہوں گے مگر اب سائنسدانوں نے کام میں ہمیشہ تاخیر کرنے کے تین ایسے فوائد بتا دیئے ہیں کہ ہم اپنی اس عادت پر پشیمان ہونے کی بجائے خوشی محسوس کریں گے۔ بھارتی اخبار انڈیاٹائمز کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”ہر کام میں تاخیر کرنے والے افراد پرہر چیز کے بارے میں اچھی امید رکھتے ہیں اور مثبت سوچ کے حامل ہوتے ہیں۔ ایسے لوگوں کو خود پر یقین ہوتا ہے کہ وہ انتہائی کم وقت میں بہت زیادہ کام کر سکتے ہیں۔چونکہ امید پرستی اور مثبت سوچ انسان کی ذہنی و جسمانی صحت پر اچھے اثرات مرتب کرتی ہیں لہٰذا ایسے افراد کی جسمانی و ذہنی حالت بھی دوسروں کی نسبت بہتر ہوتی ہے۔“

مزید جانئے: دلہن کا آئٹم سانگ پر رقص سے انکار ، بارات واپس

امریکہ کی سان ڈیاسٹیٹ گو یونیورسٹی سائنسدانوں کا مزید کہنا تھا کہ ”ہر کام میں تاخیر کرنے والے افراد پرسکون طبیعت کے مالک ہوتے ہیں اوران کی فطرت میں جلدبازی کا عنصر بھی نہیں ہوتا جو کئی کاموں میں بگاڑ کا باعث بنتا ہے۔ لہٰذا ایسے لوگ کام تاخیر سے ضرور کرتے ہیں مگر دوسروں سے بہتر انداز میں کرتے ہیں۔اس کے علاوہ ایسے افراد انتہائی تخلیقی صلاحیتوں کے مالک ہوتے ہیں۔“ ماہرین نے اس حوالے سے ایک سروے کیا جس میں ہمیشہ تاخیر کا شکار ہونے والے افراد نے انہیں بتایا کہ انہیں جب بھی کسی کام کے متعلق کوئی تخلیقی آئیڈیا ملا وہ انہی لمحات میں ملا جب اس کام میں تاخیر کا شکار ہو چکے تھے۔ اس کے برعکس تاخیر نہ کرنے والے افراد انتہائی رسمی انداز میں ہر کام بروقت سرانجام دیتے چلے جاتے ہیں اور ان کے کام میں کوئی نیاپن یا تخلیقی عنصر شامل نہیں ہوتا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -