سیاہ فام صدر اوبامہ نے سفید فام جج نامزد کر دیا

سیاہ فام صدر اوبامہ نے سفید فام جج نامزد کر دیا

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) سیاہ فام صدر بارک اوبامہ سے سیاہ فام لابی توقع کر رہی تھی کہ وہ سپریم کورٹ کے وفات پانے والے جج اینٹونن سکالیا کی جگہ کسی سیاہ فام کو نامزد کریں گے لیکن انہوں نے اس نشست کے لئے ایک سفید فام 63 سالہ میرک گارلنیڈکو منتخب کرلیا۔ نئے نامزد جج واشنگٹن کے قانونی حلقے کی معروف شخصیت ہیں۔ صدر اوبامہ کی طرف سے اس نامزدگی کے بعد سینیٹ کی توثیق کا اہم مرحلہ باقی ہے۔ جج سکالیا کی اچانک وفات کے بعد اس نشست کو پر کرنے کے لئے ایک نئی بحث کا آغاز ہوگیا تھا۔ سینیٹ کے ری پبلکن ارکان کی خواہش تھی کہ صدر اوبامہ سپریم کورٹ کے 113ویں جج کو مقرر کرنے کا فیصلہ آئندہ منتخب ہونے والے صدر پر چھوڑ دیں لیکن صدر اوبامہ نے ایسا نہیں کیا۔ صدر اوبامہ نے وائٹ ہاؤس کے روز گارڈن میں ا س سلسلہ میں منعقد ہونے والی ایک خصوصی تقریب میں نامزدگی کا اعلان کیا جب نامزد ہونے والے جج میرک گارلنیڈ اور نائب صدر جوبیڈن ان کے برابر کھڑے تھے، صدر اوبامہ نے اس موقع پر کہا کہ ’’میں نے ایک ایسے شخص کو نامزد کیا ہے جن کا شمار نہ صرف امریکہ کے انتہائی ذہین قانون دانوں میں ہوتا ہے بلکہ جن کے کام میں نفاست، عاجزی، مقاصد سے لگن اور سب سے برابر سلوک کی خوبیاں پائی جاتی ہیں۔‘‘صدر اوبامہ نے نامزدگی کے اعلان کے بعد جمعرات کی شام ان ترقی پسند گروپوں کے نمائندوں کے ساتھ ایک کانفرنس کال بھی کی جن سے وہ سینیٹ سے توثیق حاصل کرنے کے لئے دباؤ ڈلوانا چاہتے ہیں۔صدر اوبامہ نامزدگی کے لئے جن شارٹ لسٹ پر غور کر رہے تھے ان میں سیاہ فام خاتون کیٹنجی جیکسن، سیاہ فام مرد پال ویٹ فورڈ کے علاوہ بھارتی نژاد وفاقی اپیل عدالت کے جج سری سرینیواس شامل تھے۔ سابق اٹارنی جنرل ایرک ہولڈر جو خود سیاہ فام ہیں کہیے ہیں کہ وہ اس سلسلے میں سیاہ فام کمیونٹی کی تشویش سے پوری طرح آگاہ ہیں۔ ری پبلکن صدر جارج ڈبلیو بش نے اپنے آٹھ سالہ اقتدار میں 24 سیاہ فام ججوں کو نامزد کیا تھا۔ صدر اوبامہ اب تک سات سالہ عرصے میں اقلیتی طبقے سے 117 ججوں کو نامزد کرچکے ہیں۔

مزید :

علاقائی -