پولیو کا خاتمہ روشن مستقبل کی ضمانت ہے، خاتمہ اولیت ترجیح ہے ،ڈاکٹر جاوید آرائیں

پولیو کا خاتمہ روشن مستقبل کی ضمانت ہے، خاتمہ اولیت ترجیح ہے ،ڈاکٹر جاوید ...

  

ٹانک(بیورورپورٹ)پولیو کا خاتمہ روشن مستقبل کی ضمانت ہے 2016میں ٹانک سے پولیو کا خاتمہ اولین ترجیح ہے پولیو کی ویکسئین کے ساتھ بچوں کو پولیو بچاؤ کے حفاظتی ٹیکے بھی لگائے جائیں گے جس کی وجہ سے ہم اپنے بچوں کو نو بیماریوں سے بچا سکتے ہیں پولیو کے حفاظتی ٹیکے چودہ ہفتہ کی عمر سے لیکر ایک سال تک کی عمر کے بچوں کو لگائے جائیں گے اور اس کے لئے ای پی آئی کے فکسڈ سنٹروں پر انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں ان خیالات کا اظہار ڈی ایچ او ڈاکٹر طاہر جاوید آرائیں ،ای پی آئی کو آرڈنیٹر ڈاکٹر منصور ،ریجنل کو آرڈنیٹر دبلیو ایچ او ڈاکٹر عدنان نے پولیو سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکہ جات کی آگاہی کے بارے میں سول ہسپتال ٹانک میں منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیاتقریب میں اے اے سی یوسف کریم ،ڈاکٹر ولی محمد ،ایم ایس ظفر علی شاہ ، مقامی صحافیوں ،پرائم فاؤنڈیشن کے کو آرڈنیٹر عصمت کمال محسوداور بلدیاتی نمائندوں نے شرکت کی انہوں نے کہا کہ پولیو ایک خطرناک موذی مرض ہے جو بچوں کو ساری عمر کے لئے اپاہج بنا سکتا ہے جس کے خلاف جہاد کرنا ہماری قومی ذمہ داری ہے ان کا کہنا تھا کہ اس مرتبہ ٹانک کی تما یونین کونسلوں میں واقع ای پی آئی سنٹروں میں بچوں کو پولیو کے حفاظتی ٹیکے لگوائے جائیں گے اور ان ٹیکوں کی وجہ سے ہم اپنے بچوں کو خسرہ ،نمونیا گردن توڑبخاڑ جیسی دیگر نو مہلک بیماریوں سے بچا سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ والدین پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے چودہ ہفتہ کی عمر سے لیکر ایک سال تک کی عمر کے بچوں کو ضرور ای پی آئی سنٹروں پر لے کر جائیں اور انہیں وہاں پر پولیو کا حفاظتی ٹیکہ لگوائیں اور یہ حفاظتی ٹیکہ صرف ایک بار لگایا جائیگا تقریب سے ضلعی ممبر عدنان یوسف برکی ایڈوکیٹ نے بھی خطاب کیا اور کہا کہ اس تقریب کا مقصد شہریوں میں پولیو کے حفا ظتی ٹیکوں کے حوالے سے شعور اجاگر کرنا ہے انہوں نے کہا کہ جتنی ذمہ داری حکام پر عائد ہوتی ہے اتنی ذمہ والدین پر بھی عائد ہوتی ہے کہ وہ اس موذی مرض سے اپنے بچوں کو بچانے کے لئے ای اپی آئی سنٹروں پر جا کر بچوں کو پولیو کے حفاظی ٹیکے ضرور لگوائیں تاکہ ہم اپنی آنے والی نسلوں کو پولیو کے مضحر اثرات سے بچا سکیں سکیں ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -