پٹوار کلچر کے خاتمہ کیلئے لینڈریکارڈ کمپیوٹر ائزیشن کاعمل شروع ہوا، ندیم کامران

پٹوار کلچر کے خاتمہ کیلئے لینڈریکارڈ کمپیوٹر ائزیشن کاعمل شروع ہوا، ندیم ...

  

ملتان( نمائندہ خصوصی )صوبائی وزیر زکوٰۃ و عشر پنجاب ملک ندیم کامران نے تحصیل صدر اور سٹی ملتان کے لئے قائم لینڈ ریکارڈ مینجمنٹ سسٹم (LRMS)سنٹر میں عوام کے لئے کئے گئے انتظامات کو ناکافی قرار دے دیا ہے اور کہا ہے کہ سروس سنٹر آفیشل کی آسامیوں میں اضافہ کیا جائے اور عوام کو بیٹھنے کے لئے وقف جگہ میں توسیع کی جائے۔یہ بات انہوں نے گزشتہ روز متی تل چوک نادرن بائی پاس کے قریب قائم(بقیہ نمبر29صفحہ12پر )

لینڈ ریکارڈ مینجمنٹ سنٹر کے دورے کے موقع پر کہی۔ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر منظر جاوید،اے سی صدر کاشف ڈوگر اور لینڈ ریکارڈ کمپیوٹرائزیشن سنٹر کے انچارج محمد عدیل بھی ان کے ہمراہ تھے۔صوبائی وزیر نے افسران اوراپنی جائیداد کی دستاویزات کے حصول کے لئے آنے والے شہریوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کا ویژن ہے کہ صوبہ بھر میں پٹوار کلچر کا خاتمہ کیا جائے اس لئے پورے صوبے میں زمینوں کی کمپیوٹرائزیشن کا عمل شروع کیا گیا ہے تاکہ شہریوں کو اپنی جائیداد کی دستاویزات کے لئے دھکے نہ کھانے پڑیں۔ ریونیو افسران کی ذمہ داری ہے کہ 100فیصد مواضعات کا لینڈریکارڈ کمپیوٹرائزڈکریں۔ لینڈ ریکارڈ مینجمنٹ سسٹم کے لئے ملتان میں قائم کئے گئے سنٹرمیں عوام کے لئے مناسب انتظامات نہیں کئے ہیں وزیٹر کی تعداد کے مقابلے میں انہیں سروس فراہم کرنے والے سٹاف کی تعداد کم ہے جس کی وجہ سے انہیں قطار میں کھڑے ہونا پڑتا ہے۔ سنٹر میں بدانتظامی ختم کی جائے اور ہر وزیٹر کو بروقت اپنی باری پر متعلقہ معلومات اور دستاویزات فراہم کی جائیں۔ ٹوکن حاصل کرنے کے بعد سنٹر کے اندر داخل ہونے والے وزیٹر کے بیٹھنے کے لئے کشادہ جگہ قائم کی جائے اور جو افراد سنٹر کے باہر ہوں ان کے لئے مناسب انتظار گاہ قائم کی جائے اورشیڈز تعمیر کئے جائیں،پنکھے لگوائے جائیں اور کرسیوں کا انتظا م کیا جائے۔انہوں نے پینے کے پانی کے نامناسب انتظامات اور ناقص صفائی کا بھی نوٹس لیا اور صورت حال کو بہتر بنانے کی ہدایت کی۔انہوں نے کہا کہ وزیٹر کو گائیڈ کرنے کے لئے کوئی مناسب طریقہ کار نہیں ہے۔ جن مواضعات کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ نہیں کیا گیا ان کی تفصیل بڑے پینا فلیکس پر تحریر کی جائے اور سنٹر کی مرکزی بلڈنگ کے باہر آویزاں کیا جائے تاکہ سنٹر میں آنے والے افراد کی رہنمائی کی جاسکے اور ان کا وقت ضائع نہ ہو۔ ایل آر ایم ایس سنٹر کی بہتر ی کے لئے انہیں24گھنٹے کے اندر تجاویز دی جائیں تاکہ انہیں وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے نوٹس میں لایاجاسکے اور عوام کے لئے سہولیات کو بہتر بنایا جاسکے۔یاد رہے کہ صوبائی وزیر زکوٰۃ و عشر پنجاب کو وزیر اعلیٰ پنجاب نے ضلع ملتان میں محکمہ تعلیم ،صحت اور لینڈ ریکارڈ مینجمنٹ سسٹم کو بہتر بنانے کی ذمہ داری سونپی ہے۔صوبائی وزیر زکوٰۃ و عشر پنجاب ملک ندیم کامران نے تعلیمی اداروں میں سکیورٹی گارڈز کی تعداد میں اضافہ کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ ایمرجنسی نمبر کالجز اور سکولوں میں نمایاں جگہوں پر آویزاں کیا جائے تاکہ ایمرجنسی کی صورت میں طلباء و طالبات کو اطلاع دینے میں مشکل پیش نہ آئے۔ انہوں نے گزشتہ روز گورنمنٹ کالج آف سائنس ،گورنمنٹ ایمرسن کالج،گورنمنٹ کمپری ہنسو ہائی سکول اور گورنمنٹ ماڈل ہا ئی سکول گلگشت کے دورے کے موقع پر ان اداروں کے سربراہان سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ان اداروں کے سربراہان بالترتیب پروفیسر نسیم شاہد،پروفیسر ڈاکٹر نعمت الحق،سید محمد اکرم شاہ اور ای ڈی او ایجوکیشن اشفاق گجر بھی ان کے ہمراہ تھے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ تمام سربراہان تعلیمی اداروں میں سنٹرل الارم سسٹم نصب کریں،چار دیواری کو 8فٹ اونچا تعمیر کریں اور اس کے اوپر دوفٹ آہنی باڑ لگوائیں۔اس کے علاوہ کلوز سرکٹ کیمرے لگائیں جائیں اور جن مقامات پر ضروری ہو نائٹ وژن کیمرے لگائے جائیں۔جن اداروں کو سکیورٹی کے حوالے سے مسائل کا سامنا ہے وہ براہ راست انہیں تحریر ی طور پر آگاہ کریں تاکہ ان پر عمل د ر آمد کرایا جاسکے۔ ایمرجنسی نمبر بڑے بورڈ یا پینا فلیکس پر تحریر کئے جائیں اور تعلیمی ادارے میں متعدد مقامات پر انہیں آویزاں کیا جائے تاکہ وہ نمبر دور سے پڑھے جاسکیں اور کسی ایمرجنسی میں انہیں اطلاع دی جاسکے۔اس موقع پر صوبائی وزیر نے تعلیمی اداروں کے مختلف حصوں اور کنٹرول رومزکا جائزہ لیا اور سکیورٹی انتظامات کا معائنہ کیا۔انہیں بتایا گیا کہ کالجز میں دن گیارہ بجے سے قبل کسی وزیٹر کو اندر آنے کی اجازت نہیں دی جاتی اس کے علاوہ وزیٹر کا تمام ریکارڈ رجسٹر میں درج کیا جاتا ہے۔انہیں بتایا گیا کہ گورنمنٹ ایمرسن کالج 52ایکڑ رقبہ پر محیط اور اس میں 10ہزارطلباء و طالبات زیر تعلیم ہیں کالج کی سکیورٹی کے لئے 18کلوز سرکٹ کیمرے نصب کئے گئے ہیں اور 8سکیورٹی گارڈز خدمت سرانجام دے رہے ہیں۔انہیں بتایا گیا کہ گورنمنٹ کالج آف سائنس میں مزید دو گارڈ بھرتی کرنے کے لئے بجٹ درکار ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -