’اس چھکے نے میری زندگی تباہ کردی‘ وہ بھارتی باؤلر جو 30 سال بعد بھی پاکستان کی فتح کو نہیں بھول پایا

’اس چھکے نے میری زندگی تباہ کردی‘ وہ بھارتی باؤلر جو 30 سال بعد بھی پاکستان ...
’اس چھکے نے میری زندگی تباہ کردی‘ وہ بھارتی باؤلر جو 30 سال بعد بھی پاکستان کی فتح کو نہیں بھول پایا

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)شارجہ میں مارے گئے جاوید میانداد کے چھکے کو 30سال ہوچکے ہیں لیکن شائقین کرکٹ کے دل میں آج بھی اس فتح کی یاد تازہ ہے۔کسی اور کو یہ چھکا بھولے یا نہیں لیکن جس باؤلر کو یہ چھکا پڑا اسے آج بھی یہ شاٹ ایک بھیانک خواب لگتی ہے۔

چیتن شرما اس میچ سے قبل بھارت کے بہترین باؤلرز میں گنے جاتے تھے اور یہی وجہ ہے کہ 18اپریل1986ءکے میچ کے آخری اوور میں انہیں اوور دیا گیا تھا۔آخری گیند پر جب پاکستان کو آسٹریلیشیا کپ کے فائنل میں جیت کے لئے 4رنز درکار تھے اور اس کے 9کھلاڑی آؤٹ ہوچکے تھے اور میانداد سامنے تھے۔ چیتن شرما نے ایک ماہر فاسٹ باﺅلر کی طرح یارکر پھینکا لیکن میانداد جو کہ سینچری بنا چکے تھے نے اسے آسانی کے ساتھ فل ٹاس بنالیا اور گیند کو سٹیڈیم سے باہر پھینک دیا۔

اس چھکے نے جہاں پاکستان کو فتح دلوائی وہیں چیتن شرما کو بھی یہ چھکا آج تک نہیں بھولا۔ جب بھی ان سے اس چھکے کے بارے میں پوچھاجاتا ہے تو ان کا کہنا ہوتا ہے کہ آج بھی جب کوئی مجھے ملتا ہے تو سب سے پہلے اس چھکے کے بارے میں پوچھتا ہے۔’اس میچ کو ہارنے کے بعد میرے لئے گھر سے باہر نکلنا ممکن نہ تھا،میں جب بھی کہیں باہر جاتا تو لوگ مجھے عجیب نظروں سے دیکھتے اور مجھے نظر انداز کرنے کی کوشش کرتے،اس چھکے نے میری زندگی تباہ کرکے رکھ دی۔‘

چیتنن شرما کاکہنا ہے کہ میں اس چھکے کو بھولنا چاہتا ہوں لیکن لوگ مجھے ایسا بھی نہیں کرنے دیتے اور ہر بار اس کے بارے میں پوچھ کر مجھے شرمندہ کرتے رہتے ہیں۔

مزید :

T20 World cup -