چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے (سی پیک) سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کیلئے پاکستان کو مغربی ممالک کے ساتھ اقتصادی رابطوں کو وسعت دینی ہو گی، فرحت علی

چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے (سی پیک) سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کیلئے ...

اسلام آباد (اے پی پی) چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے (سی پیک) سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کیلئے پاکستان کو مغربی ممالک کے ساتھ اقتصادی رابطوں کو وسعت دینی ہو گی تا کہ منصوبہ کے سفارتی، سیاسی اور معاشی فوائد کے حصول کو بڑھایا جا سکے۔ اوورسیز انویسٹرز چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (او آئی سی سی آئی) کے سابق صدر فرحت علی نے اپنے تحقیقی مقابلے میں کہا ہے کہ سی پیک کے بنیادی مرحلے کے دوران پاکستان میں توانائی کے شعبہ میں 35 ارب ڈالر جبکہ بنیادی ڈھانچہ کی ترقی کیلئے 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی جا رہی ہے مزید براک خطے میں صنعتی و تجارتی سرگرمیوں کے فروغ کیلئے سی پیک کے روٹ کے ساتھ ساتھ 29 مصنوعی اقتصادی زونز بھی قائم کئے جا رہے ہیں۔ سی پیک کے تحت بنائے جانے والے تمام اقتصادی زونز میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کیلئے پر کشش مراعات دی جا رہی ہیں اور توانائی، تیل و گیس، معدنیات وکان کنی، چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعت، صحت، تعلیم، مالیات اور خدمات کے شعبوں سمیت مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک سے بھر پور استفادہ کیلئے پاکستان کو یورپی ممالک کے ساتھ اپنے رابطوں میں مزید وسعت اور استحکام پیدا کرنا چاہیے تا کہ سی پیک کے میگا پراجیکٹ کے سیاسی، سفارتی اور معاشی فوائد سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کیا جا سکے جو قومی معیشت کی ترقی کیلئے ایک اہم سنگ میل ثابت ہو گا

مزید : کامرس