ویسٹ واٹر کی آلودگی کم،سیوریج نالوں کیساتھ شجرکاری کو فروغ دینے کا فیصلہ

ویسٹ واٹر کی آلودگی کم،سیوریج نالوں کیساتھ شجرکاری کو فروغ دینے کا فیصلہ

ملتان ( نمائندہ خصوصی) پاکستان واٹر آپریٹرز نیٹ ورک کے ملتان میں ہونے والے سٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس میں شہریوں کو فراہمی و نکاسی آب کی بہتر اور معیاری سروسز فراہم کرنے ،ویسٹ واٹر کی آلودگی ٹریٹمنٹ کے ذریعے کم کرنے اور جدید طریقہ کار اختیار کرکے سیوریج نالوں کے ساتھ شجر کاری کو فروغ دینے اور تمام واٹر آپریٹرز کا ایک دوسرے کے تجربات سے استفادہ حاصل کرنے کی(بقیہ نمبر14صفحہ12پر )

پالیسی جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ کوہاٹ اور ایبٹ آباد کو سٹیئرنگ کمیٹی کا باقاعدہ ممبر بنانے کی بھی منظوری دے دی گئی پاکستان واٹر آپریٹرز نیٹ ورک (پی ون) کا اجلاس گزشتہ روز چیرمین و منیجنگ ڈائریکٹر واسا ۔فیصل آباد سید زاہد عزیز کی صدارت میں ابدالی روڈ پر واقع ہوٹل میں منعقد ہوا ۔جس میں منیجنگ ڈائریکٹر واسا ملتان راؤ محمد قاسم،منیجنگ ڈائریکٹر واسا راوالپنڈی شوکت محمود ،ڈپٹی سیکرٹری ہاؤسنگ پنجاب معظم جمیل ، کراچی واٹر اینڈسیوریج بورڈ ، کے نمائندہ گان ایوب شیخ، چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈبلیو ایس ایس سی پشاور خان زیب خان ، سی ای او کوہاٹ عارف رؤف ،سی ای او مردان ناصر غفور ، ڈائریکٹر واسا حیدرآباد محسن نذر، ڈائریکٹر ریونیو کوئٹہ محمد اسلم ،ایگزیکٹو انجینئر کوئٹہ محمد رمضان ، ڈائریکٹر انجینئرنگ گوجرانوالہ فدا حسین سمیت سٹیئرنگ کمیٹی کے ممبران ، آبزرور سمیت واسا ملتان کے آفیسران نے شرکت کی اجلاس کے آغاز میں منیجنگ ڈائریکٹر واسا راؤ محمد قاسم نے ملتان کی تاریخی اہمیت اور واسا سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ اپریل 1992 سے واسا کے قیام کو (25) سال کا عرصہ ہو چکا ہے اور اس وقت واسا ملتان کے شہریوں کو فراہمی آب کی (55) فیصد جبکہ نکاسی آب کے حوالے سے (65) فیصد آبادی کو سروسز فراہم کر رہا ہے واٹر سپلائی اور سیوریج سسٹم کی موجودہ صورتحال اور آئندہ (25) سالوں کی ضرورتوں کے پیش نظر 2015تا2040 تک کی ماسٹر پلاننگ کا منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے اور اپریل 2017کے آخر میں ماسٹر پلان کے منصوبے کو مکمل کر لیا جائے گا جبکہ تھرڈ اپرٹی کے ذریعے اینڈرائڈ بیسڈ کنزیومر سروے کے منصوبے پر بھی تیزی سے کام جاری ہے انہوں نے اس دوران جاری ترقیاتی منصوبوں، بجٹ کے اعداد و شمار ریکوری کی صورتحال اور فنانشل منیجمنٹ سسٹم اڈاپٹ کرنے بارے بھی تفصیلی بریفنگ دی جبکہ شہر کے جنوبی حصے میں (184) ایکڑ رقبے پر محیط ویسٹ واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ اور (11) کلومیٹر طویل سلج کیرئیر کی ورکنگ بارے بھی بتایا سٹیئرنگ کمیٹی کے ممبران نے ویسٹ واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ کے منصوبے میں غیر معمولی دلچسپی کا اظہار کیا اور اس کی ورکنگ بارے سیر حاصل گفتگو کی،قبل ازیں چیرمین سٹیئرنگ کمیٹی سید زاہد عزیز اور ایم ڈی واسا ملتان راؤ محمد قاسم نے میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ عوام کے تعاون سے شہری آبادیوں میں سیوریج اور واٹر سپلائی سسٹم مزید بہتر بنایا جا سکتا ہے نظام کی بہتری واسا کے بلوں کی ادائیگی سے ممکن ہے انہوں نے کہا کہ سٹیئرنگ کمیٹی شہری علاقوں میں فراہمی و نکاسی آب کے مسائل زیر بحث لارہی ہے اور مسائل کے حل کے لیے سفارشات حکومت کو بھجوائی جائیں گی جبکہ ایم ڈی واسا نے ملتان شہر میں اوور ہیڈ ریزروائر کے حوالے سے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ بہت جلد ملتان شہر میں واٹر میٹر لگانے کا عمل شروع کیا جا رہا ہے اور تمام اوور ہیڈ ریزوائر چالو ہوجائیں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر