پیرس میں ایک بار پھر ایسا واقعہ کہ دنیا میں ایک بار پھر مسلمانوں کے لئے مسائل بڑھیں گے

پیرس میں ایک بار پھر ایسا واقعہ کہ دنیا میں ایک بار پھر مسلمانوں کے لئے مسائل ...
پیرس میں ایک بار پھر ایسا واقعہ کہ دنیا میں ایک بار پھر مسلمانوں کے لئے مسائل بڑھیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) فرانس میں پے درپے دہشت گردی کے کئی واقعات رونما ہو چکے ہیں جن میں درجنوں بے گناہ لقمہ¿ اجل بن گئے۔ اب پیرس میں ایک اور ایسی واردات رونما ہوئی ہے لیکن اس بار ایک شدت پسند نے اپنے ہی باپ اور بھائی کے گلے کاٹ ڈالے ہیں۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ملزم نے چغہ پہن رکھا تھا جو بعض مسلمان پہنتے ہیں۔ اس نے ’اللہ اکبر‘ کا نعرہ لگایا اور خنجر نکال کر گلی میں اپنے باپ اور بھائی کے گلے کاٹ دیئے۔

امریکہ میں مسلمان جوڑے پر’حملہ‘ ایک ایسی لڑکی دفاع میں آگئی کہ جان کر آپ بھی داد دیں گے

یہ واقعہ ہائی رائز بلڈنگ کے قریب پیش آیا۔ ایک عینی شاہد کا کہنا ہے کہ ”میں نے اچانک کسی شخص کو مدد کے لیے پکارتے ہوئے سنا۔ جب میں نے کھڑی سے باہر دیکھا تو ایک شخص سڑک پر پڑا تھا اور اس کے گلے سے خون نکل رہا تھا جبکہ ملزم دوسرے شخص کا گلہ کاٹ رہا تھا۔ ملزم اس کا گلہ کاٹنے کے بعد اس کی لاش کے پاس گھٹنوں کے بل بیٹھ گیا اور دعا مانگنے لگا۔ وہ تب تک دعا مانگتا رہا حتیٰ کہ پولیس آ گئی اور اسے گرفتار کرکے لے گئی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ تاحال واقعے کی تفصیلات معلوم نہیں ہو سکیں لیکن اتنا علم ہوا ہے کہ 21سالہ ملزم شدت پسندانہ خیالات رکھتا تھا۔

مزید : بین الاقوامی