’جب ملکہ برطانیہ کی موت ہوگی تو ہم یہ بات دنیا کو بتائیں گے‘

’جب ملکہ برطانیہ کی موت ہوگی تو ہم یہ بات دنیا کو بتائیں گے‘
’جب ملکہ برطانیہ کی موت ہوگی تو ہم یہ بات دنیا کو بتائیں گے‘

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ کے بادشاہ جارج پنجم کے ڈاکٹرلارڈ ڈیوسن نے 20جنوری 1936ءکو بادشاہ کی موت کا اعلان کرنے کے لیے ایک کوڈ جاری کیاتھا۔ کوڈ یہ تھا کہ ”بادشاہ کی زندگی پرامن طریقے سے اختتام کی طرف بڑھ رہی ہے۔“ بعدازاں جب ڈاکٹر ڈیوسن نے بادشاہ کو تکلیف سے نجات دینے اور موت سے ہمکنار کرنے کے لیے انہیں 750ملی گرام مارفین اور کوکین کا انجکشن دیا، اس فقرے کے ذریعے دنیا کو بتایا گیا کہ بادشاہ اب دنیا میں نہیں رہا۔ اب ملکہ برطانیہ کی موت کے اعلان کے لیے بھی کوڈ جاری کر دیا گیا ہے۔ یہ کوڈ ”لندن برج از ڈاﺅن“ (London Bridge is Down)ہے۔ جس روز ملکہ برطانیہ الزبتھ دوئم کا انتقال ہوا اس فقرے کے ذریعے برطانوی قوم اور دنیا کو بتایا جائے گا کہ وہ اب نہیں رہیں۔

مذہبی رہنما کو قیمتی ترین ہیرہ مل گیا اور اس نے وہ۔۔۔ ایسا سچا واقعہ کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ کوڈ جاری کرنے کا مقصد شہریوں کو مناسب طریقے سے ملکہ کی موت سے آگاہ کرنا ہے تاکہ وہ اچانک صدمے سے دوچار نہ ہوں۔اس کوڈ کا اعلان ہوتے ہی ان رسومات کا آغاز ہو جائے گا جن کی کئی دہائیوں سے ریہرسل کی جا رہی ہے۔ توقع کی جا رہی ہے کہ ملکہ برطانیہ کی موت پر محل میں 5لاکھ سے زائد لوگ جمع ہوں گے جو ان کی آخری رسومات میں شرکت کریں گے۔ملکہ کی دیکھ بھال کرنے والی ڈاکٹروں کی ٹیم کے انچارج پروفیسر ہو تھامس (Huw Thomas)ہیں۔ انہیں ملکہ کے کمرے تک رسائی حاصل ہے اور وہی فیصلہ کرتے ہیں کہ کون کمرے میں داخل ہو سکتا ہے اور کون سی اطلاع عوام تک پہنچائی جانی چاہیے۔ وہی ان کی موت کا اعلان بھی کریں گے۔ ملکہ کی آنکھیں بند ہونے کے بعدشہزادہ چارلس بادشاہ بن جائیں گے۔

مزید : برطانیہ