مکڑیاں ، انسانوں اور وہیل مچھلیوں سے زیادہ گوشت کھاتی ہیں: سائنسدانوں کاانکشاف

مکڑیاں ، انسانوں اور وہیل مچھلیوں سے زیادہ گوشت کھاتی ہیں: سائنسدانوں ...
مکڑیاں ، انسانوں اور وہیل مچھلیوں سے زیادہ گوشت کھاتی ہیں: سائنسدانوں کاانکشاف

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

برلن (ڈیلی پاکستان آن لائن) گھروں کی چھتوں اور دیواروں پر جالے بنانے والی مکڑیوں سے دنیا بھر کی خواتین خانہ کو شدید نفرت ہے۔ یہ نفرت ان کی شکل و صورت کی وجہ سے نہیں بلکہ ان جالوں کی وجہ سے ہے جو گھروں کی چھتوں اور دیواروں کی صفائی کے دوران انہیں جھاڑنا پڑتے ہیں ۔ لیکن ان کے بارے میں یہ انکشاف ہوا کہ گوشت کھانے کی ان کی عادت حیران کن طور پر بہت زیادہ ہے۔ سائنس دانوں کے مطابق مکڑیاں سالانہ بنیادوں پر انسانوں کی نسبت دوگنا گوشت کھاتی ہیں۔دنیا بھر کی25ملین میٹرک ٹن وزن کی مکڑیاں سالانہ800ملین ٹن گوشت کھاتی ہیں۔

نریندر مودی کی مسلم دشمنی اور اپنے انتہا پسندانہ ہندو نظریات کو چھپانے کی بھونڈی کوشش ، اتر پردیش میں ایک ایسے مسلمان کو وزیر منتخب کر لیا جو ۔۔۔۔حقیقت جان کر آپ بھی سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

دا سائنس آف نیچر‘ نامی جریدے نے جرمنی، سوئٹزرلینڈ اور سویڈن سے تعلق رکھنے والے سائنس دانوں کی ایک تحقیق شائع کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ یہ ننھی منی مخلوق دنیا بھر میں سالانہ بنیادوں پر جتنے کیڑے مکوڑے کھا جاتی ہے، انہیں تولا جائے تو ان کا وزن قریب 800 ملین میٹرک ٹن بنتا ہے۔اس کے مقابلے میں دنیا بھر کے انسان سالانہ 400 ملین میٹرک ٹن گوشت کھاتے ہیں۔ یعنی مکڑیاں ہر سال انسانوں کی نسبت قریب دگنا گوشت کھا جاتی ہے۔

اسلام کے نام پر بننے والے پاکستان میں ناموس رسالت کاتحفظ نہ کرسکیں تو ہمیں جینے کا کوئی حق نہیں:مولانا فضل الرحمن

مکڑیوں اور انسانوں کے بعد وہیل مچھلیاں تیسرے نمبر پر ہیں جو سالانہ 280 تا 500 ملین میٹرک ٹن خوراک کھاتی ہیں۔ سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ مکڑیوں کی شکار کرنے کی ہوس اگر ماحول بدل جائے تو کم یا زیادہ بھی ہو جاتی ہے۔ سائنس دانوں نے یہ تخمینہ مکڑیوں کے وزن کی صورت میں لگایا ہے۔

برطانیہ نے ترکی کو ساڑھے چار ہزار سال پرانی ایک ایسی چیز واپس کردی کہ سن کر طیب اردگان خوش ہوجائیں گے

اس تحقیق کے مطابق اگر کرہ ارض پر موجود تمام مکڑیوں کو تولا جائے تو ان کا مجموعی وزن 25 ملین میٹرک ٹن بنتا ہے۔ اس حوالے سے یہ بات بھی حیران کن ہے تو مکڑیاں ہر سال اپنی مجموعی آبادی سے کئی گنا زیادہ وزن کے برابر گوشت کھا جاتی ہیں۔

محکمہ پاسپورٹ سے ویزوں میں توسیع کا اختیار واپس لے لیا گیا:وزارت داخلہ

اب تک سائنس دانوں کا خیال تھا کہ مکڑیاں فصلوں میں موجود حشرات الارض کے خاتمے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ لیکن اس تازہ تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ کھیتوں کھلیانوں میں موجود کیڑے مکوڑوں کے خاتمے میں مکڑیوں کا کردار دراصل بہت کم ہے۔ مکڑیاں سب سے زیادہ جنگلات میں موجود حشرات الارض کا شکار کرتی ہیں۔

بیت اللہ کے سامنے منگنی کی انگوٹھی پہننے کی شرط پانچ سال بعد پوری ہوگئی

مکڑیوں کی نوے فیصد سے زائد غذا حشرات الارض پر مبنی ہوتی ہے۔ تاہم کیڑے مکوڑوں، مکھیوں اور مچھروں کا شکار کرنے کے علاوہ مکڑیوں کی کچھ قسمیں ایسی بھی ہیں جو مینڈکوں، چھپکلیوں، سانپوں اور مچھلیوں سے لے کر چمگادڑوں سمیت پرندوں تک کو کھا جاتی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس