نشتر: کرونا سکریننگ کیمپ لاوارث، ڈاکٹرزکی انتظامیہ پرکڑی تنقید

نشتر: کرونا سکریننگ کیمپ لاوارث، ڈاکٹرزکی انتظامیہ پرکڑی تنقید

  

ملتان (نمائندہ خصوصی، سٹی رپورٹر)نشتر ہسپتال ملتان میں قائم کورونا سکریننگ کیمپ میں سہولیات کا فقدان ہے کورونا کے شبہ میں آنے والے مریض اور اسکے(بقیہ نمبر33صفحہ7پر)

رشتہ دار کو سکریننگ کیمپ سے کوئی حفاظتی کٹ فراہم نہ کی جا سکی،ینگ ڈاکٹرز نے حکومتی اقدامات پر سوالات اٹھا دئیے تفصیل کے مطابق نشتر ہسپتال میں اس وقت کورونا وائرس کے شبہ میں آنے والے مریضوں کیلئے کورونا سکریننگ کیمپ بنا دیا گیا ہے تاہم وہاں موجود عملے سمیت مریضوں اور لواحقین کیلئے کوئی خاطر خواہ اقدامات نہیں اٹھائے جا سکے ہیں، بدھ کی دوپہر سکریننگ کیمپ میں کورونا کے شبہ میں آنے والے مریض اور اسکے ساتھ آنے والے رشتہ دار کو نہ تو ماسک اور نہ ہی حفاظتی کٹ فراہم کی گئی، جبکہ متعلقہ عملہ حفاظتی کٹس میں ملبوس رہا تاہم لواحقین اور شبہ میں آئے مریضوں کے لئے بتائے گئے پروٹول کے مطابق عمل نہیں کیا گیا،اس حوالے سے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر فاران اسلم نے بتاہا کہ شبہ میں آنے والے مریض نے بتایا وہ ایران سے واپس آیا ہے،اس کے باوجود اسکو اور اسکے ساتھ آئے ساتھی کو حفاظتی کٹس نہیں دی گئیں،حکومت وبائی وائرس سے متعلق غیر سنجیدہ ہے واضح حکمت عملی نہ ہونے کی وجہ سے پورے نشتر ہسپتال میں کورونا وائرس پھیلنے کا خدشہ پیدا ہو چکا ہے جبکہ ایسا لگ رہا حکومت جان بوجھ کر کورونا پھیلانا چاہتی ہے تاکہ ان کو قرضے مل سکیں۔ جبکہینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن ملتان کے وفد نے ایم ایس نشتر ہسپتال ڈاکٹر شاہد محمود بخاری اور اے ایم ایس او پی ڈی ڈاکٹر خالد مسعود اعوان سے ملاقات کی اور کرونا وائرس کے ایشو پر اپنی تجاویز تفصیل کے ساتھ بیان کیں،ینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر علی وقاص اور جنرل سیکرٹری ڈاکٹر نصرت بزدار نے ایم ایس ڈاکٹر شاہد بخارکو بتایا کہ ان کو نشتر ہسپتال میں آئسولیشن وارڈ بنانے پر شدید تحفظات ہیں اور یہ آئسولیشن وارڈ کسی الگ بلڈنگ میں بننا چاہیے تاکہ نشتر ہسپتال کے مریضوں کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھا جاسکے- ڈاکٹر نصرت بزدار نے کہا کہ کرونا وائرس سے بچنے کے لیے تمام ڈاکٹرز کو حفاظتی کٹس ماسک اور گلوز فراہم کیے جائیں, او پی ڈی میں رش کم کرنے کے لئے فلٹر لگائے جائیں, اس کے علاوہ ینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ فوری طور پر فوکل پرسن ٹیم کا اعلان کیا جائے اور ایک ٹیلی فون نمبر کا اجرا کیا جائے جس سے کرونا وائرس کے متعلق معلومات لی جا سکیں,ینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن کے وفد نے یہ بات واضح کی کہ تمام کنسلٹنٹس پورے جذبے کے ساتھ ساتھ کام کرنا چاہتے ہیں ہیں مگر ان کو کو عالمی معیار کی سہولیات فراہم کرنا انتظامیہ کی ذمہ داری ہے تا کہ تمام ڈاکٹرز ز اپنے آپ کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھ سکیں۔نشتر ہسپتال ملتان میں کورونا وائرس کے مشتبہ مریض زیر علاج ہیں جبکہ آوٹ ڈور میں روزانہ کی بنیاد پر ہزاروں مریض معمول کے معائنہ کے لئے پہنچ رہے ہیں جس کے باعث آوٹ ڈور میں ڈیوٹی کرنے والے ڈاکٹر پیرا میڈیکس اور نرسز شدید عدم تحفظ کا شکار ہیں گزشتہ کئی روز سے ڈاکٹری تنظیموں کی جانب سے نشتر انتظامیہ کو حفاظتی کٹس فراہم کرنے کا کہا جا رہا تھا تاہم گزشتہ روز بھی حفاظتی ماسک سمیت کٹس فراہم نہ کئے جانے پر ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکس کی جانب سے دوسرے روز بھی سروسز معطل رہیں،ادھر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ملتان کے صدر ڈاکٹر فاران اسلم کا کہنا تھا کہ کٹس کی فراہمی تک آوٹ ڈور اور آپریشن تھیٹرز میں سروسز معطل رکھی جائیں گی،اس حوالے سے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے وفد نے وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا سے ملاقات کی اس دوران آپریشن تھیٹر وارڈز اور او پی ڈی میں ڈاکٹروں کی تعداد کم کرنے،او پی ڈی اور وارڈز میں صرف حفاظتی کٹس سے لیس ڈاکٹرز کی ڈیوٹی کی یقین دہانی،ڈیوٹی روسٹر کیمطابق ڈاکٹروں کی وارڈز میں ڈیوٹی،ایمرجنسی سے متعلقہ تمام وارڈز اور آئی سو لیشن میں موجود تمام عملے کو حفاظتی کٹس کی فراہمی،نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ میں صرف ضلع ملتان کے مریضوں کو داخل کرنے،ایک مریض کے ساتھ صرف ایک اٹینڈنٹ کی اجازت اور تمام نان ایمرجنسی شعبہ جات بند کرنے کے حوالے سے بات ہوئی جس پر وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا نے ڈاکٹروں کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا اور تمام مطالبات کی تائید کرتے ہوئے جلد مسائل کے حل کی یقین دہانی کروائی۔ پی ایم اے ملتان کے صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج، ڈاکٹر ذولقرنین، ڈاکٹر وقار نیازی، ڈاکٹر شیخ عبدالخالق سمیت دیگر ڈاکٹرز کے وفد نے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کارڈیالوجی ڈاکٹر رانا الطاف رانا، ایم ایس ڈاکٹر فہیم لابر سے کارڈیالوجی ہسپتال ملتان میں ملاقات کی اور ڈاکٹرز، پیرا میڈیکس سٹاف سمیت دیگر عملے کو کورونا وائرس سے بچانے کے لئے فوری طور پر اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا، جس پر پی ایم اے ملتان کی درخواست پر کارڈیالوجی ہسپتال انتظامیہ نے کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیئے اقدامات شروع کر دیئے ہیں، جبکہ بڑی تعداد میں فیس ماسک، دستانے اور ہینڈ سینیٹائزر مہیا کر دیئے گئے، جبکہ یہ بھی کہا گیا ایک مریض کے ساتھ صرف ایک اٹینڈنٹ کی پالیسی پر سختی سے عمل در آمد بھی ہو گا، اس حوالے سے پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج کا کہنا تھا کہ ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے آج سے روٹین آوٹ ڈور سروسز کو بھی معطل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاہم صرف جن مریضوں کی حالت تشویشناک ہو گی انہیں صبح 8 سے 10 بجے تک مکمل حفاظتی کٹ کے ساتھ دیکھا جا سکے گا، تاہم کوئی فا لو اپ مریض کو چیک نہیں کیا جائے گا، اسکے ساتھ ساتھ ہسپتال کے داخلی اور خارجی گیٹوں پر تھرمل سکینرز بھی لگائے جائیں گے تاہم ڈاکٹرز اور عملے کو حفاظتی کٹس مہیا کی جا ئیں گی، او پی ڈی اور فارمیسی کے باہر مریضوں کے اٹینڈنٹ کو اکٹھا ہونے کی بھی اجازت نہیں ہو گی، جبکہ کورونا کے مشتبہ مریضوں کی سکریننگ کے لیئے فرنٹ ڈیسک بھی بنانے کا فیصلہ ہوا ہے، جس کے ساتھ ساتھ ہسپتال کی مسجد سے کارپٹ ہٹانے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے ، پی ایم اے ملتان کے صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج کا مزید کہنا تھا کہ ہسپتالوں میں کام کرنے والے ڈاکٹرز اور عملے کے لئے مکمل حفاظتی اقدامات کے لیئے کام جاری رکھیں گے بعدازاں پی ایم اے کے وفد نے ڈسٹرکٹ شہباز شریف ہسپتال کا بھی دورہ کیا۔وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کا اس وقت ایک کنفرم مریض اور ایک مریض شبہ میں نشتر ہسپتال میں زیر علاج ہے،پنجاب بھر کے ہسپتالوں میں زیر علاج مریضوں سے متعلق معلومات لاہور اور اسلام آباد سے جاری کی جائیں گی،نشتر ہسپتال میں گیٹ نمبر 2 کے پاس کورونا سکریننگ کیمپ قائم ہے،کورونا کے تشخیصی ٹیسٹ اب نشتر ہسپتال لیبارٹری میں کئے جا رہے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اپنے دفتر میں صحافیوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے

کیا اس موقع پر وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا کا مزید کہنا تھا کہ کورونا کے شبہ میں آنے والے مریضوں کو پروٹوکول کے مطابق متعلقہ وارڈ میں منتقل کیا جاتا ہے،شبہ میں آنے والے مریض کو خصوصی لباس پہنا کر وارڈ منتقل کیا جاتا ہے،ہمارے ہسپتال کے ڈاکٹرز پیرا میڈیکس نرسز اپنی جان کی پرواہ کئے بغیر مریضوں کی خدمت کر رہے ہیں،نشتر ہسپتال میں دو وارڈز پر مشتمل آئی سو لیشن قائم ہے،کورونا وائرس ایک عام فلو ہے جس سے گھبرانے کی نہیں صرف احتیاط کی ضرورت ہے،پورے پاکستان میں کورونا کی وجہ سے کوئی موت واقع نہیں ہوئی،انہوں نے کہا کہ کورونا کے شبہ میں آنے والے مریضوں کا پی سی آر ٹیسٹ نشتر ہسپتال میں کیا جا رہا ہے،مہنگا ٹیسٹ ہے جس کی کٹس موجود ہیں،اسلئے صرف شبہ میں موجود افراد کا ٹیسٹ کیا جا رہا ہے۔کرونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر قلعہ کہنہ قاسم باغ پرجانے والے تمام راستے بند کر دئیے گئے محکمہ اوقاف نے اولیا ء کرام کے درباروں کو بند کرکے درباروں پر تعینات ملازمین کی تاحکم ثانی چھٹیوں پر بھیج دیا بتایاجاتاہے کہ درباروں کے احاطے میں موجود مساجد میں شیڈول کے مطابق اذان دی جائے گی اور تمام نمازوں کی ادائیگی بھی شیڈول کے مطابق اداکی جائے گی جبکہ شہر کے مختلف علاقوں میں موجود محکمہ اوقاف کے زیر کنٹرول مساجد بھی شیڈول کے مطابق نمازوں کی ادائیگی ہو گی۔ریلوے ہیڈکوارٹرانے ملتان سمیت تمام ڈویژنوں کوکوروناوائرس کے حوالے سے سرگرمیاں محدودکرنے کے حوالے سے ہدیات جاری کردی گئی ہیں۔جس کی روشنی میں ڈویژنل پرسانل آفیسرملتان نبیلہ اسم نے گزشتہ روزتمام شعبہ کے ذمہ دران کوباقاعدہ مراسلہ بھی جاری کردیاہے جس میں کہاگیاہے کہ ڈویژنل سپرٹننڈنٹ ریلوے آفس اوردیگرافسران سے ملاقات پر5اپریل تک پابندی ہوگی انتہائی ضروری کام کی صورت میں فون پررابطہ کیاجاسکے گا۔ڈی ایس آفس سمیت دیگرریلوے دفاترمیں غیرمتعلقہ افرادکے داخلہ پرپابندی عائد ہوگی،تمام ملازمین اورافسران سے کہاگیاہے کہ اپنے محکمانہ کارڈگلے میں لٹکاکررکھیں اسی طرح گیٹ چوکیدارسے کہاگیاہے کہ محکمانہ کارڈکے بغیرکسی ملازم یاآفیسرکوڈی ایس آفس میں داخل نہ ہونے دے۔تمام ملازمین اورافسران سے کہاگیاہے کہ ایک دوسرے سے ہاتھ ملانے سے گریزکریں،چاریاچارسے زیادہ ملازمین اکھٹے نہ ہوں،کسی بھی ملازم کوبخار،کھانسی،سانس لینے میں دشواری ہوتوفوری طورپرڈویژنل میڈیکل آفیسرسے رابطہ کرے۔تمام شعبہ کے ذمہ دران کوہدایات پرسختی سے عملدآمدکروانے کیلئے کہاگیاہے۔ضلع کچہری میں کورونا وائرس کا خطرہ،،جیل کے قیدیوں کو عدالتوں میں پیش نہ کیا جا سکا چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے صوبہ بھر کے سیشن ججز کو جیل میں ہی قیدیوں کی سماعت کرنے کا حکم دیا ہے عدالتوں میں قیدیوں کے پیش نا ہونے پر بخشی خانہ ویرانی کا منظر! پیش کرنے لگا، ضلعی عدلیہ کے سیشن ججز جیل کے حوالاتی ملزمان کے عدالتی ریمانڈ میں توسیع اور حاضری کے لئے جوڈیشل مجسٹریٹس کو جیل میں بھیجیں ملتان ڈسٹرکٹ کورٹ میں سول جج عمران عابد کو جیلوں میں قیدیوں کی سماعت کے لئے مقرر کیا گیا ہے جس کا مقصد عدالتوں میں قیدیوں کے رش کی وجہ سے کرونا وائرس کے بڑھنے کو روکنا ہے۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ملتان سہیل اکرام نے قید ملزمان کے کیسز کی جیل سماعت کے لئے جوڈیشل مجسٹریٹ عمران عابد کو مقرر کردیا ہے۔سول جج عمران عابد نے گزشتہ روز سے ہی جیل میں جا کر قیدیوں کے کیسز کی سماعت کی جبکہ ڈسٹرکٹ کورٹس میں جونئر وکلاء اور منشیوں کو بلاوجہ کورٹ روم میں کھڑے ہونے سے منع کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ جیل سماعت کا حکم نیشنل جوڈیشل پالیسی 2012 کے تحت دیا گیا تھا جس پر سیشن جج ملتان نے جیل سماعت کے لیے مجسٹریٹ مقرر کردیا ہے۔

تنقید

مظفرگڑھ، رحیم یارخان، میلسی، صادق آباد، کوٹ چھٹہ (بیورو رپورٹ، نامہ نگار، تحصیل رپورٹر، بیورو رپورٹ، نمائندہ پاکستان)حکومت پنجاب کی جانب سے جنوبی پنجاب (بقیہ نمبر32صفحہ7پر)

کے کرونا سے متاثرہ مریضوں کے علاج معالجہ اور انھیں آئسولیشن میں رکھنے کے لیے ضلع مظفرگڑھ کے رجب طیب اردگان ہسپتال کو منتخب کیا گیا ہے،ڈیرہ غازی خان کے قرنطینہ، نشتر ہسپتال ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے دیگر علاقوں سے بڑی تعداد میں کرونا وائرس کے مشتبہ اور تصدیق شدہ مریضوں کو رجب طیب اردگان ہسپتال میں شفٹ کرنے کا سلسلہ مسلسل جاری ہے، کرونا کیسز کی مسلسل آمد کے باعث ضلع بھر میں شہریوں کی بے چینی میں اضافہ ہو رہا ہے اور سوشل اور مقامی میڈیا پر افواہوں کا بازار بھی مسلسل گرم ہے،ایسے میں مظفرگڑھ کی ضلعی انتظامیہ،ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی اور رجب طیب اردگان ہسپتال کی انتظامیہ کی جانب سے روایتی غفلت اور بے حسی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے،رجب طیب اردگان ہسپتال ضلع مظفرگڑھ کی حدود میں انڈس ٹرسٹ کے زیر انتظام کررہا ہے مگر ذرائع کیمطابق ضلع کی حدود میں ہونے کے باوجود بھی ہسپتال کی انتظامیہ کی جانب سے ضلعی انتظامیہ اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کو جنوبی پنجاب کے مختلف علاقوں سے آنے والے کرونا کیسز کے متعلق لاعلم رکھا جارہا ہے.واضح رہے کہ جنوبی پنجاب کے کرونا سے متاثرہ مریضوں کے لیے رجب طیب اردگان ہسپتال کو مختص کرنے کے حکومتی فیصلے سے ہسپتال میں کرونا وائرس کے مریضوں کی مسلسل آمد کے عمل کے دوران شہریوں کی بے چینی ختم کرنے اور افواہوں کے سدباب کے لیے نہ تو ضلعی انتظامیہ کی جانب سے کسی میڈیا بریفنگ کا اہتمام کیا گیا اور نہ ہی ہسپتال انتظامیہ نے کسی قسم کی معلومات فراہم کرنا گوارا کیا.ضلع مظفرگڑھ کے شہریوں میں پھیلے خوف اور ہیجانی کیفیت کے خاتمے کے لیے گزشتہ روز بھی صحافیوں نے ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ انجینئر امجد شعیب ت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -