علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ کے اعلیٰ افسران عملہ دفاتر تک محدود مسافر خوار

علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ کے اعلیٰ افسران عملہ دفاتر تک محدود مسافر ...

  

لاہور(ارشدمحمود گھمن /سپیشل رپورٹر)علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پرکرونا وائرس کے خطرہ کے پیش نظر اعلیٰ افسران وعملہ خودکرونا سے بچنے کیلئے دفاتر کی حد تک محدود ہوگیا،جس سے کرونا وائرس پھیلنے کا خطرہ بڑھ گیا،ایئرپورٹ پرعملے کی عدم دستیابی کے باعث مسافروں کا سکریننگ کا عمل متاثر ہونے لگا لیکن حکام بالا نے بھی چپ سادھ لی۔تفصیلات کے مطابق علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر روزانہ سیکڑوں مسافر بیرون ملک سفر کرتے ہیں، یادر ہے کرونا وائر س کے پیش نظر پورے ملک صرف3ایئرپورٹس کو مسافروں کیلئے آپریشنل کیا گیاہے جس میں علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئر پورٹ لاہور، بینظیر انٹرنیشنل ایئر پور ٹ اسلام آباد اورکراچی ایئر پورٹ شامل ہیں۔حکومت کی جانب سے کرونا وائرس کے خطرہ کے پیش نظر سخت احکامات جاری کئے گئے،لیکن علامہ اقبال انٹر نیشنل ایئر پورٹ لاہور نے ان احکامات کوپس پشت ڈال دیا ہے، ذرائع کا کہناہے ایئر پورٹ کے افسران سمیت دیگر عملہ کروناوائرس کے خطرہ کے پیش اپنی جانیں بچانے کی خاطر مبینہ طور پراپنے دفاتر تک محدود ہوگیاہے،جس کی وجہ سے بیرون ممالک سے وطن آنیوالے اور پاکستان سے بیرون ممالک سفر کرنیوا لے مسافروں کی صحیح طریقہ سے کرونا وائرس کی تشخیص نہیں ہوپارہی،جس کے سبب کرونا وائرس پھیلنے کا خطرہ بڑھ گیا،لیکن حکام بالا سب کچھ جانتے ہو ئے بھی خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں، واضح رہے سیکرٹری سول ایوی ایشن حسن ناصر جامی نے بھی کرونا وائرس کے بڑھتے واقعات کے پیش نظر ہوائی اڈوں پر کام کرنیوالے تمام اہلکاروں کی حفاظت کو یقینی بنانے اور شعبہ صحت کے عملے کو ہدایت کی کہ تمام عملے کی سکریننگ اور انہیں ماسک اوردستانوں کی فراہمی یقینی بنا ئی جائے لیکن اس پر بھی مکمل عمل درآمد نہیں ہورہا جس کے باعث عملہ خوفزدہ ہو کر کرونا وائرس سے اپنی جان بچانے کیلئے مبینہ طور پردفاتر کی حد تک محدود ہو گیا ہے،یادرہے کرونا وائرس کے پیش نظر 10مارچ کو اٹلی،12مارچ کودوحہ،15مارچ سعودی ارب اور17مارچ کو مسقط کی پروازیں معطل کردی گئیں،دوسری جانب پی آئی اے حکام کاکہناہے کرونا وائرس کے خطرہ کے پیش نظر مختلف ملکوں نے سفری پابندیاں مزیدسخت کردی ہیں،جس کے تحت انہوں نے بھی سعودی ارب،دوحہ، اٹلی اورمسقط جانیوالی پراوزوں پر پابندی لگادی ہے تاہم دیگر ممالک میں پراوزوں کا شیڈول حسب معمول جاری ہے، کینیڈا، اومان، متحدہ عر ب امارات اور ملائیشیا نے سیاحتی، وزٹ اور کاروباری ویزے پر سفر کرنے پر پابندی عائد کردی،اب 18 مارچ سے تا حکم ثانی کینیڈا میں صرف کینیڈین یا امر یکی شہری، مستقل قیام پذیر یا سفارتی عملہ داخل ہوسکے گا،پی آئی اے کی 18 مارچ کو ٹورنٹو جانیوالی پرواز کسی وزٹ ویزا والے کو نہیں لے کر جاسکی،اسی طرح 17 مارچ سے اومان میں تمام شہریت والے مسافر ماسوائے اومانی یا خلیجی شہریوں کے داخلے پر پابندی تھی،متحدہ عرب امارات میں کاغذی ویزے پر داخلے پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے،متحدہ عرب امارات میں صرف پاسپورٹ پر ثبت ویزا والے مسافر داخل ہو سکیں گے،ملائیشیا جانیوالے مسافر بھی صرف اسی صور ت میں سفر کر سکیں گے اگر ان کے پاس مائیشین شہریت ہو یا سفارتی اجازت نامہ ہو،پی آئی اے کے پروازیں معمول کے مطابق جاری تاہم پابندی والے مسافر نہیں جا سکیں گے،پی آئی اے ترجمان کا کہناہے معلومات کیلئے پی آئی اے کال سنٹر سے رابطہ کریں،وہ مسافر جو پابندی سے متاثر ہوں ان سے التماس ہے اپنے ٹکٹ تبدیل کروا لیں،یہ ایک ہنگامی صورتحال ہے جس پر تمام افراد سے تعاون کی اپیل ہے،پی آئی اے اس دشواری کیلئے معذرت خواہ ہے مگر پابند یوں پر ہمارا اختیار نہیں،ترجمان سول ایوی ایشن کا کہناہے کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے ایئرپورٹ پر مسافروں اور عملے کیلئے موثر اقدام کئے گئے ہیں،تا ہم حکومت کے احکامات کی روشنی میں کرونا وائرس کے بچاؤ کیلئے عملی اقدامات کررہے ہیں۔

علامہ اقبال ائیر پورٹ

مزید :

صفحہ آخر -