ریلیف پیکج کا اعلان نہ کرنا افسوس نا ک ہے، انتخاب عالم سوری

  ریلیف پیکج کا اعلان نہ کرنا افسوس نا ک ہے، انتخاب عالم سوری

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیر اعظم کی تقریر میں مزدور طبقے کے لیے ریلیف پیکج کا اعلان نہ کرنا افسوس نا ک ہے، موجودہ بحران سے ڈیلی ویجز ملازمین بے روز گارہوچکے ہیں، کورونا وائرس کے سبب بندکیے جانے والے شاپنگ مال، شادی ہال ودیگر مقامات پر بے روزگار ہونے والے مزدور اور غریب طبقے کا کوئی پرسان حال نہیں حکومت اس بحران کے نتیجے میں متاثر ہونے والے مزدور اور غریب طبقے کے روزگار کا فوری متبادل انتظام کرے، یہ بات ہیومن رائٹس نیٹ ورک کے صدر انتخاب عالم سوری اور جوائنٹ سیکریٹری طارق خان نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہی، انتخاب عالم سوری نے مزید کہاکہ موجودہ بحران میں سب سے زیادہ متاثر غریب اور متوسط طبقہ ہورہاہے، جس کی پرواہ اور دیکھ بھال حکمرانوں کا اولین فرض ہے، اسی طرح صاحب حیثیت افراد اپنی ذمہ داریوں کو سمجھتے ہوئے غریب اور متوسط طبقے کے مسائل بھر پور نظر رکھے اور ان کے حل کے لیے کوشش جاری رکھیں، متاثرہ کمپنی کے مالکان بحران سے فائدہ اٹھاتے ہوئے مزدوروں اور ملازمین کو بے روز گار نہ کریں بلکہ اپنی حیثیت کے مطابق ان کے روزگار اور دیگر ضروریات کا خصوصی خیال رکھیں، جس سے ان کی دعاؤں نتیجے میں ان کے کاربار میں برکتیں قائم رہیں گی، انہوں نے مزید کہا کہ حکومت بوکھلاہٹ کا شکارہوکر کاروباری زندگی کا پہیہ بالکل جام نہ کرے کیونکہ ہمارا ملک امریکہ یا دیگر ممالک کی طرح عوام خوشحال نہیں ہے اور نہ غریب عوام کے پاس اتنے پیسے ہیں کہ وہ اپنی ضروریات زندگی اور اناج کو جمع کرسکیں، لہذا تمام اداروں کو حکومت سمیت ترجیح بنیاد پر مزدور اور متوسط طبقے کا خصوصی خیال رکھنا ہوگا۔اسی طرح چھوٹی کریانہ کی دکانوں کو کھلا رکھنے کے فیصلے کو ہم سراہتے ہیں اور اس فیصلے کو برقرار رکھنے کی اپیل کرتے ہیں۔ ویسے بھی بڑے اسٹورز کے کھل جانے سے چھوٹے دکاندار پریشان حال رہے ہیں

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -