ایمپلائز یونین ٹی ایم اے کوھاٹ ورکروں کے مسائل حل کرنے میں ناکام

ایمپلائز یونین ٹی ایم اے کوھاٹ ورکروں کے مسائل حل کرنے میں ناکام

  

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) ایمپلائز یونین ٹی ایم اے کوھاٹ ورکروں کے مسائل حل کرنے میں یکسر ناکام ہو چکی ہے الیکشن کے دوران ورکروں سے کیے گئے وعدے پانی کا بلبلہ بن گئے ٹی ایم اے کے ورکروں سے ہونے والی ناانصافی کا ہم ازالہ کریں گے ان خیالات کا اظہار سابقہ صدارتی امیدوار اور اپوزیشن لیڈر ملتان حبیب نے مقامی میڈیا کے نمائندوں سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ٹی ایم اے ایمپلائز یونین کی اس سے بڑی ناکامی کیا ہو گی کہ دو ماہ سے زیادہ عرصہ گزرنے کے باوجود تاحال یہ اپنی یونین عہدیداروں کا چناؤ نہ کر سکے اور نہ ہی تاحال اس یونین نے حلف لیا انہوں نے مزید کہا کہ ایمپلائز یونین کے صدر اور جنرل سیکرٹری کے رویئے کی وجہ سے ان کے اپنے قریبی ساتھی ان کو چھوڑ کر جا رہے ہیں جو کہ باعث شرم ہے ملتان حبیب کا کہنا تھا کہ الیکشن کی تقریروں میں جو وعدے کرتے تھے کہ دستکاری ٹیچرز کی تنخواہیں 15000 کریں گے فکسڈ ملازمین کو مستقل کریں گے حج کوٹہ بحال کروائیں گے ادارے کو نقصان پہنچانے والوں کا راستہ روکیں گے پڑھے لکھے ملازمین کی پروموشن کے لیے اپنا کردار ادا کریں گے ادارے کے ورکروں کے ساتھ ناانصافی نہیں ہونے دیں گے مگر افسوس ان میں سے کسی بات پر بھی عمل نہ ہو سکا حتیٰ کہ ملازمین کی سنیارٹی لسٹ بھی دو مہینوں میں یہ لوگ نہ بنا سکے اس سے زیادہ ان کی نااہلی اور کیا ہو گی ملتان حبیب کا مزید کہنا تھا کہ یہ اللہ کی مہربانی ہے کہ یونین کا صدر اور جنرل سیکرٹری کوئی اور ہے اور ورکروں کی خدمت کا کام اللہ پاک مجھ سے لے رہا ہے انہوں نے واضح کہا کہ موجودہ صدر اور جنرل سیکرٹری یونین چلانے کے اہل نہیں اگر یہ اہل ہوتے تو دو مہینوں میں کم سے کم سنیارٹی لسٹ تو بنوا لیتے ورکروں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں پر آواز تو بلند کرتے مگر یہ ایسا نہیں کر سکتے انہوں نے اعلان کیا کہ ورکروں کے مسائل کے حل کے لیے وہ ٹی ایم اے انصاف ورکر یونین کے پلیٹ فارم سے جدوجہد کریں گے اور جلد اپنی یونین کے قیام کا اعلان کریں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -