جماعت اسلامی کا وزیراعظم اور آرمی چیف سے گاڑیاں مالکان کو دینے کا مطالبہ

جماعت اسلامی کا وزیراعظم اور آرمی چیف سے گاڑیاں مالکان کو دینے کا مطالبہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر)جماعت اسلامی ضلع خیبر نے وزیر اعظم اور آرمی چیف سے مطالبہ کیا ہے کہ سکیورٹی اہلکاروں کی جانب سے تحویل میں لی گئی باڑہ کے مقامی مقامی لوگوں کی گاڑیاں مالکان کے حوالے کرانے کیلئے اقدامات کرے بصورت دیگر عدالت سے رجوع کرینگے اور احتجاجی تحریک کا آغاز کیاجائیگا۔ پشاور پریس کلب میں بدھ کے روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی ضلع خیبر شاہ فیصل آفریدی، جنرل سیکرٹری مراد حسین، ڈپٹی جنرل سیکرٹری خان ولی خان اورامیر جماعت اسلامی باڑہ سلطان اکبرنے کہاکہ خیبر اور ضلع اورکزئی کے مابین روڈ کی تعمیر پر جاری کام جاری تھا کہ کنسٹرکشن کمپنی اور سکیورٹی فورسز کے مابین بعض معاملات پر تنازعہ ہو اجس کے بعد کنسٹرکشن کمپنی کا کام بند کر دیا گیا،باڑہ کے مقامی لوگ اپنا روزگار چلانے کی غرض سے اس کنسٹرکشن کمپنی کیلئے اپنی بڑی گاڑیاں کرائے پر دیئے ہوئے تھے،کمپنی کی مشینری بند کرتے وقت سکیورٹی فورسز نے باڑہ کے مقامی لوگوں کی 13گاڑیاں بھی بند کر دیں تھیں جو کہ ایک سال سے سکیورٹی فورسز کے تحویل میں ہیں، جماعت اسلامی ضلع خیبر چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ،گورنر خیبر پختونخوا شاہ فرمان،وزیر اعلیٰ خیبر پختون خوا محمود خان سے مطالبہ ہے کہ کمپنی اور سکیورٹی فورسز کے معاملات اپنی جگہ ہے لیکن باڑہ کے مقامی لوگوں کے روزگار کا واحد ذریعہ یہی گاڑیاں تھیں جن کو فوری طور پر ان کے حوالہ کی جائے اور ان کا کرایہ سمیت گاڑیوں کے مرمت پر انے والا خرچہ دینے کیلئے بھی اقدامات کییے جائے،باڑہ کے عوام کیلئے سکیورٹی فورسز معزز اور محترم ہیں تاہم کمپنی کے تنازعے میں مقامی لوگوں کو متاثر نہ کیا جائے،باڑہ کے مقامی لوگ مجبور ہوچکے ہیں کہ اپنی گاڑیوں کے حصول کیلئے سڑکوں پر احتجاج کیلئے نکلیں۔انہوں نے کہاکہ اگر شنوائی نہ ہوئی تو متاثرہ خاندان وزیر اعلیٰ ہاوس کے سامنے احتجاجی دھرنا دیں گے اورعدالت سے رجوع کرینگے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -