خیبر،شاہراہ پر گاڑیوں سے آگاہی کی آڑ میں بھتہ وصولی شروع

    خیبر،شاہراہ پر گاڑیوں سے آگاہی کی آڑ میں بھتہ وصولی شروع

  

خیبر (بیورو رپورٹ) انتظامیہ کی اجازت کے بغیر مردان این جی او کے اہلکار وں نے شاہراہ پر گاڑیوں سے اگاہی کے نام پر بھتہ وصولی کی۔ٹریفک کے اصول اور قوانین کی اگاہی کے متعلق بروشور تقسیم کر رہے تھے۔گاڑی سے دو سو رپے وصولی کا سلسلہ چلتا رہا۔بعد میں لنڈ ی کو تل ٹریفک انچارج نے کاروائی کرتے ہوئے انہیں تھانہ لے گئے۔تفصیلات کے مطابق مرادن سے تعلق رکھے والے این جی او کے کچھ اہلکار ضلع خیبر کی تحصیل لنڈ ی کو تل کے چار وازگئی کے مقام پر گاڑیوں میں ٹریفک اصول اور قوانین کے اگاہی کے حوالے سے پمفلٹ تقسیم کر رہے تھے جسکی اجازت مقامی انتظامیہ سے نہیں لی گئی تھی اور نہ لنڈ ی کو تل ٹریفک کے ذمہ داروں کو اعتما د میں لیا گیاتھا پمفلٹ دیتے وقت گاڑی سے بدلے میں دو سو روپے لیتے تھے جس سے ایک ہنگامہ کھڑا ہوا کیونکہ بہت سی گاڑیوں کے مالکان اور ڈرائیور زدینے کے لئے تیار نہیں تھے سوشل میڈیا پر بھی ان کی خبریں پھیل گئی سیاسی جماعتوں نے اس فعل کی مذمت کی اور کہا کہ یہ ایک گھناونا اور بھدا فعل ہے جو مردان سے تعلق رکھنے والی این جی او ہمارے علاقے میں گاڑیوں سے پیسے لیتی ہے انہوں نے کہا کہ ہمارا پنا انتظامیہ اور ٹریفک کے پولیس موجود ہیں جو کرنا ہے تو انہوں نے کرنا چاہئے سوشل میڈیا پر جاری ہونے والے مذمتی بیانات کے بعد لنڈ ی کوتل ٹریفک کے انچارج نیک عمل نے کاروائی کی اور چاروازگئی سے این جی او کے اہلکاروں کو اٹھا کر تھانہ لے گئے جہاں پر ان سے بات چیت ہوئی اور بعد میں انہیں واپس پشاور بھیج دیئے این جی او کے اہلکاروں کو واپس بھیجنے کے بعد سیاسی جماعتوں نے کہا کہ ان کے خلاف باقاعدہ کاروائی کرنا چاہئے تھا انہیں کیسے ایسے چھوڑ دیئے گئے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -