پاکستان میں کوروناوائرس کے مریضوں میں مسلسل اضافہ،تعداد341 ہوگئی

پاکستان میں کوروناوائرس کے مریضوں میں مسلسل اضافہ،تعداد341 ہوگئی
پاکستان میں کوروناوائرس کے مریضوں میں مسلسل اضافہ،تعداد341 ہوگئی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان میں بھی کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہونے لگا۔ایک ہی دن میں40کیسز سامنے آگئے۔ سندھ میں مزید3بلوچستان میں مزید 22 ، خیبرپختونخوا میں نئے 15کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کے بعدمجموعی طورپرملک بھر میں کورونا وائرس کے مریضوں کی کل تعداد341 تک جاپہنچی ہے۔

سندھ کے محکمہ صحت کی میڈیا کوآرڈینیٹر میران یوسف نے3 نئے کیسز کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ صوبے میں مریضوں کی کل تعداد 211 تک پہنچ چکی ہے۔ میران یوسف کے مطابق 151 کیسز تفتان سے سکھر آنے والے زائرین کے ہیں جبکہ 59 کیسز کراچی اور ایک حیدر آباد سے ہے۔دوسری جانب بلوچستان میں بھی مزید 22 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی۔ صوبائی حکومت کے ترجمان لیاقت شاہوانی کے مطابق صوبے میں مجموعی طورپر45 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔

محکمہ ریلیف خیبرپختونخوا کے ترجمان لطیف الرحمٰن کا کہنا تھا کہ صوبے میں 15 نئے کیسز ڈیرہ اسماعیل خان، کرم، مردان، لوئر دیر اور مالا کنڈ، پشاور اور ہری پور سے سامنے آئے ہیںانہوں نے بتایا کہ تمام متاثرہ افراد کو ڈیرہ اسماعیل خان میں آئسولیشن وارڈ میں رکھا گیا ہے۔گلگت بلتستان میں 15، اسلام آباد میں 2 افراد اور آزاد کشمیر میں ایک شخص متاثر ہے۔ ان نئے کیسز کے ساتھ اب تک ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 341 تک جا پہنچی ہے جبکہ اس عالمی وبا سے پاکستان میں 2 افراد ہلاک بھی ہوچکے ہیں۔

خیال رہے پاکستان میں کورونا وائرس کاپہلا کیس 26 فروری 2020کو کراچی میں سامنے آیاتھا۔اسی روزمعاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزانے ملک میں مجموعی طور پر 2 کیسز کی تصدیق کی تھی۔

کورونا وائرس کی وجہ سے سندھ میں مارکیٹیں بند ہیں تاہم  احکامات کی خلاف ورزی پر150 تاجروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ سندھ میں انٹرسٹی بس سروس کی معطلی کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔بس سروس19مارچ سے آئندہ15روز تک بند رہے گی تاہم مال بردار ٹرانسپورٹ کو پابندی سے استثنیٰ حاصل ہوگا۔معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا کے مطابق اس موذی وائرس سے اب تک دو پاکستانی جاں بحق بھی ہوئے ہیں۔دونوں ہلاکتیں خیبرپختونخوا میں ہوئی ہیں۔

صوبائی (کے پی) کے مشیراطلاعات اجمل وزیر کے مطابق کورونا کا ایک مریض پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال میں تھا جس کا تعلق ہنگو سے تھااور اس کی عمر صرف پچیس برس تھی۔جبکہ دوسری ضائع ہونے والی قیمتی جان مردان کے50سالہ سعادت خان کی تھی۔ سعادت خان 9مارچ کو سعودی عرب سے پاکستان پہنچے تھے۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے پنجاب میں کورونا وائرس کے33مریضوں کی تصدیق کر دی ہے۔ پنجاب حکومت نے کورونا کنٹرول کیلئے دوسو چھتیس ملین فنڈز اور تین اسپتالوں میں کورونا مریضوں کیلئے قرنطینہ قائم کردیا گیا ہے۔پنجاب میں شاپنگ مالز اور ہوٹلز رات دس بجے تک کھلے رہیں گے جب کہ مری سمیت متعدد سیاحتی مقامات میں سیاحوں کا داخلہ بند کر دیا گیا ہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -