جنسی لذت کی وہ چیز جس کی فروخت میں کورونا وائرس کی وجہ سے کئی گنا اضافہ ہوگیا

جنسی لذت کی وہ چیز جس کی فروخت میں کورونا وائرس کی وجہ سے کئی گنا اضافہ ہوگیا
جنسی لذت کی وہ چیز جس کی فروخت میں کورونا وائرس کی وجہ سے کئی گنا اضافہ ہوگیا

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کے باعث ایک طرف دنیا خوف کا شکار ہے اور دوسری طرف اس وائرس کی وجہ سے ایسی شرمناک مصنوعات کی فروخت میں اضافہ ہونے کی خبر آ گئی ہے کہ سن کر یقین نہ آئے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق برطانوی اعدادوشمار میں بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس آنے کے بعد سے جنسی کھلونوں کی فروخت میں بہت زیادہ اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ اس کی وجہ لوگوں کا رضاکارانہ طور پر خود کو گھروں میں قید کر لینا ہے۔

لوگ گھر میں تنہاءرہنے کے لیے جہاں دیگر کئی چیزوں کا اہتمام کر رہے ہیں وہیں جنسی کھلونے بھی بڑی تعداد میں خرید رہے ہیں، تاکہ تنہائی کے ان دنوں میں بوریت سے بچ سکیں۔ اعدادوشمار میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ ایک ماہ میں جنسی کھلونوں کی فروخت میں 13فیصد اضافہ ہوا ہے۔ دیگر مغربی و یورپی ممالک میں جنسی کھلونوں کی شرح میں اس سے بھی زیادہ ہوشربا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

کورونا وائرس پھیلنے کے بعد سے کینیڈا میں حیران کن طور پر جنسی کھلونوں کی فروخت 135فیصد زیادہ ہوئی جبکہ اٹلی میں یہ شرح 71فیصد رہی۔ اسی طرح امریکہ اور دیگر مغربی و یورپی ممالک میں بھی یہ شرح تیزی سے اوپر جا رہی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ”جنسی کھلونے زیادہ فروخت ہونے کی اصل وجہ گھروں میں قید رہنا نہیں بلکہ لوگوں کے ساتھ میل جول سے متعلق خوف ہے، جس کی وجہ سے مردوخواتین باہم جنسی تعلق قائم کرنے سے بھی خوفزدہ ہیں چنانچہ وہ زیادہ سے زیادہ جنسی کھلونوں پر انحصار کرنے لگے ہیں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -