کرونا وائرس سے بچنے کیلئے زہریلی شراب پینے سے ایران میں سینکڑوں لوگ ہلاک ہوگئے

کرونا وائرس سے بچنے کیلئے زہریلی شراب پینے سے ایران میں سینکڑوں لوگ ہلاک ...
کرونا وائرس سے بچنے کیلئے زہریلی شراب پینے سے ایران میں سینکڑوں لوگ ہلاک ہوگئے

  

تہران (ڈیلی پاکستان آن لائن) ایران میں کرونا وائرس سے محفوظ رہنے کیلئے زہریلی شراب پینے سے جمعرات کے روز 65 مزید ہلاکتیں ہوگئی ہیں جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 2 ہفتوں کے دوران 180 ہوگئی ہے۔

ایران میں کرونا وائرس پھیلا تو یہ افواہ اڑ گئی کہ شراب پینے سے کووِڈ 19 سے محفوظ رہا جاسکتا ہے، یہ افواہ ملتے ہی لوگوں نے زیادہ مقدار میں شراب نوشی شروع کردی ۔ ایران کی نیم سرکاری خبر ایجنسی ISNA کے مطابق 6 مارچ کو زہریلی شراب پینے کی وجہ سے 427 لوگ متاثر ہوئے تھے۔ ان میں سے 180 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ 14 لوگ تشویشناک حالت میں آئی سی یو میں پڑے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران میں الکوحل کا استعمال ممنوع ہے، ایرانی قانون کے مطابق جو شخص شراب پیتا ہے ، بناتا ہے یا بیچتا ہے اس کو قید اور کوڑوں کی سزا دی جاسکتی ہے۔

واضح رہے کہ ڈبلیو ایچ او، حکومتوں اور ڈاکٹرز کی جانب سے عوام سے بار بار تلقین کی جاتی ہے کہ واٹس ایپ گروپوں میں آنے والی خود ساختہ حفاظتی تدابیر اور کرونا وائرس کے علاج پر توجہ نہ دیں بلکہ صرف اور صرف آفیشل اطلاعات پر عملدرآمد کریں۔ پاکستان میں بھی کرونا وائرس کے علاج کے متعدد طریقے سامنے آتے رہتے ہیں، پاکستانیوں کو چاہیے کہ وہ ایسی کسی بات پر کان نہ دھریں اور صرف آفیشل اطلاعات پر ہی یقین کریں۔

مزید :

بین الاقوامی -