انتقام

انتقام

  

کسی جنگل میں ایک گھوڑا اور ہرن دو دوست رہتے تھے۔ایک دفعہ کسی بات پر دونوں میں جھگڑا ہو گیا۔ہرن کافی پھْرتیلا تھا،لڑائی مار پیٹ تک پہنچ گئی۔گھوڑے کو زیادہ چوٹیں آئی تھیں۔دونوں ایک دوسرے سے دُور بیگانوں کی طرح رہنے لگے۔

    ایک دن گھوڑے نے جنگل میں ایک شکاری کو دیکھا تو اس نے سوچا کہ ہرن سے انتقام لیا جائے۔وہ شکاری کے پاس گیا اور پوچھا:”کیا تم کسی ہرن کو شکار کرنے آئے ہو؟“

شکاری:”ہاں!“

گھوڑے نے کہا:”میں تمہیں ایک ہرن کا ٹھکانہ بتا سکتا ہوں۔“

    شکاری دل ہی دل میں خوش ہوا،یعنی ایک تیر سے دو شکار۔اس نے گھوڑے سے کہا:”اگر تم میری مدد کرو تو کیا ہی بات ہے!کیا میں تمہاری پیٹھ پر بیٹھ جاؤں؟“گھوڑا فوراً راضی ہو گیا۔

    شکاری نے پھر کہا:”اگر تمہیں تکلیف نہ ہو تو میں تمہارے منہ میں لگام ڈال دوں؟“

    گھوڑے نے پوچھا:”اس سے کیا ہو گا؟“

    شکاری نے کہا:”جیسے ہی مجھے ہرن نظر آئے گا میں تمہاری لگام اس طرف موڑ دوں گا۔“

    آخر شکاری نے گھوڑے کو لگام ڈالی اور زور سے کھینچا۔ہرن کے ٹھکانے پر پہنچ کر گھوڑا ہرن کے پیچھے دوڑا۔کچھ دُور جا کر ہرن نڈھال ہو گیا۔شکاری نے ہرن کو گولی مار دی۔گھوڑے کا انتقام تو پورا ہو گیا،لیکن وہ آج تک اسی لگام سے بندھا زندگی گزار رہا ہے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -