حلیمزئی میں شگئی کرکٹ گراؤنڈ کے تنازعہ نے شدت اختیارکرلی

حلیمزئی میں شگئی کرکٹ گراؤنڈ کے تنازعہ نے شدت اختیارکرلی

  

مہمند(نمائندہ پاکستان) حلیمزئی میں شگئی کرکٹ گراؤنڈ کے تنازعہ نے شدت اختیارکرلی، بابی خیل قوم نے کلکٹر کی طرف سے سیکشن فور پراپنی تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ جائیداد ہماری قوم کی ذاتی ملکیت ہیں کمیشن نے غلط فیصلہ کرکے ہم کو لڑایا جارہا ہے، شگئی نہیں بابی خیل کرکٹ گراؤنڈ میں تنازعہ ختم نہ کی گئی توہم جاری کام کو بند کرنے سے بھی گریز نہیں کرینگے۔ ان خیالات کا اظہار بابی خیل قوم کے ملک سید افضل، مولاناامیراللہ جنیدی، ملک دلیل خان، اسلام باچا اور دیگر نے مہمند پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کے  دوران کیا۔ کہ شگئی کرکٹ گراؤنڈ پر حال ہی میں تعمیراتی کام جاری ہے مگر ہم نے کام جاری ہونے سے پہلے ضلعی انتظامیہ کو آگاہ کیا گیا تھا کہ یہ ہماری ملکیت ہے مگر پھر ضلعی انتظامیہ نے سیکشن فور کے تحت ایک کمیشن کو تشکیل دیا گیا جس میں شبقدر کانگڑ ہ کے بااثر میا ں گا ن جواد خان ولد کفایت پسران کانگڑہ میاں گان سے رقم لیکر غلط رائے دی گئی۔ جبکہ ہم نے اس سے صاف انکار کیا۔ اب ہم مقامی انتظامیہ کو آگاہ کرتے ہیں کہ آپ نے سیکشن فور لگائی ہے کہ یہ ہماری ذاتی قومی ملکیت ہے اس میں کسی باہر کے آدمی کا کوئی حق نہیں ہے ہمارے ساتھ ناروا سلوک کو بند کیا جائے اگر بند نہیں کی گئی تو پوری علاقے کے قوم سراپا احتجا ج بن جائیں گے اور کرکٹ گراؤنڈ پر جاری تعمیراتی کا م کو بھی بند کرنے سے دریغ نہیں کرینگے۔انہو ں نے کہا کہ ہم رسم رواج جرگہ کے ذریعے واک اخیتار دینے کو تیا ر ہے مگر اس کے باوجود ہم کسی زبردستی کو ہرگز نہیں مانتے لہٰذا فوری طورپر جاری کام کو بندکرکے ان کا معاوضہ ختم کردیا جائے اور شگئی کرکٹ گراؤنڈ کی بجائے بابی خیل کرکٹ گراؤنڈ کا نام دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ سابقہ دور میں اجتماعی ذمہ داری کے تحت مقامی انتظامیہ کئی بار لاکھوں روپے جرمانہ ہم سے وصول کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -