فوڈ اتھارٹی ٹیموں کا پاپڑ فیکٹری پر چھاپہ،چیکنگ، جرمانہ

  فوڈ اتھارٹی ٹیموں کا پاپڑ فیکٹری پر چھاپہ،چیکنگ، جرمانہ

  

ملتان، کوٹ ادو(سپیشل رپورٹر، تحصیل رپورٹر)ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی کی ہدایت پر خوراک میں غیر معیاری اجزا کی ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف فوڈ سیفٹی ٹیموں کی کارروائیاں جاری ہیں۔ تفصیلات کیمطابق فوڈ سیفٹی ٹیم نے ملتان کے علاقے چاہ مرادوالا میں چیکنگ کے دوران غیر معیاری اجزا کی ملاوٹ کرنے پر پاپڑ فیکٹری کو 30 ہزار(بقیہ نمبر43صفحہ7پر)

 جرمانہ کردیا۔ پاپڑ کھار اور بوریکس جیسے کیمیکل کی ملاوٹ سے غیر معیاری محلول تیار کیا جارہا تھا۔ خوراک میں کھلے رنگ کا استعمال، کیمیکل ڈرمز میں سٹور کیا گیا۔ ناقص اجزا اور محلول سے ہزاروں کلو گرام پاپڑ تیار کیے جانے تھے۔ اسی طرح ملتان میں گوشت کی نامناسب سٹوریج پر ایک ریسٹورنٹ کو 15 ہزار جبکہ 2 ہوٹلز کو صفائی کے ناقص انتظامات پر 10، 10 ہزار روپے کے جرمانے کردیے گئے۔ اس کے علاوہ خانیوال میں بیکری کو صاف پانی کیلیے فلٹر پلانٹ نہ لگانے، ٹوٹے فریزر میں خوراک کی سٹوریج پر 25 ہزار روپے جرمانہ کردیا گیا۔ مزید وہاڑی میں 2 مصالحہ جات چکیوں کو پروڈکٹس کی تیاری میں ناقابل سراغ پاڈر اور غیر معیاری اجزا کے استعمال پر 25 ہزار کے جرمانے کردیے گئے۔  وزیر خوراک حامد یار ہراج  کی ہدایت پرملاوٹ مافیا کے خلاف خصوصی آپریشن جاری ہے،گزشتہ روزپنجاب فوڈاتھارٹی نے کوٹ ادو میں ملاوٹی دودھ کی بڑی سپلائی ناکام بنادی،فوڈسیفٹی ٹیموں کے کوٹ ادوناکہ لگاکرجدید ترین لیکٹو سکین مشینوں سے دودھ کا معائنہ کیا اور ملاوٹ شدہ ناقص دودھ ہونے پر 4130ہزارلٹرملاوٹی دودھ تلف کردیاگیا،اس بارے میں ڈائریکٹرجنرل پنجاب فوڈاتھارٹی رفاقت علی نسوآنہ کا کہناتھاکہ موقع پر لیے گئے نمونوں کے ناقص نتائج آنے پر مضر صحت دودھ تلف کیا۔ناقص دودھ کوٹ ادو اور گردونواح سے مظفرگڑھ سپلائی کیاجارہاتھا۔ تلف کیے جانیوالے دودھ میں پانی اور کیمیکلز کی ملاوٹ کی گئی تھی۔حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزیاں کرنے سیہرصورت روکاجائیگا۔ عوام سے گزارش ہے کہ دودھ میں ملاوٹ کرنے والوں کی نشاندہی میں ہمارا ساتھ دیں۔دودھ کا مفت ٹیسٹ کروانے کے لیے پنجاب فوڈاتھارٹی کے قریبی دفتر تشریف لائیں۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -