ایکسین ہائی وے کیس،کمشنر  ڈیرہ کو معاملہ حل کرنے کی ہدایت

  ایکسین ہائی وے کیس،کمشنر  ڈیرہ کو معاملہ حل کرنے کی ہدایت

  

ملتان (خصو صی  رپورٹر) لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج مسٹر جسٹس محمد شان گل نے ایکسین ہائی وے لیہ کی جانب سے حکومت پنجاب کی شفافیت کا جنازہ نکالنے سے متعلق درخواست پر کمشنر ڈیرہ غازی کو ہدایت کی کہ وہ پیٹشنر کو 21 مارچ کی صبح ساڑھے دس بجے (بقیہ نمبر20صفحہ6پر)

اپنے دفتر میں سماعت کرکے فیصلہ کریں عدالت عالیہ نے پہلے بھی انہیں معاملہ حل کرکے رپورٹ ڈپٹی رجسٹرار جوڈیشل کو جمع کرانے کی ہدایت کی تھی لیکن ابھی تک معاملے کو سنجیدگی سے نہیں لیا گیا۔ یاد رہے کہ 3 فروری کو سڑکوں کی تعمیر کے کنٹریکٹ کے لیے ٹینڈر طلب کیے گئے مگر اس روز ایکسیئن سمیت پورا عملہ دفتر سے غائب رہا کنٹریکٹر سجاد قادر نے ڈپٹی کمشنر لیہ کمشنر ڈیرہ غازی خان کو تحریری طور پر آگاہ کیا انہوں نے ڈائریکٹر فنانس کی سربراہی میں قائم کمیٹی کو تحقیقات  کا حکم دیا۔وزیر اعلی کی معائنہ ٹیم نے ہائی وے آفس کا وزٹ کیا تو پورا عملہ غیر حاضر پایا گیا ٹیم نے اپنی رپورٹ وزیراعلی پنجاب کو بھجوا دی مگر ملوث افسران کے خلاف تاحال کوئی کاروائی نہیں ہوئی جس پر کنٹریکٹر ایسوسی ایشن نے لاہور ہائی کورٹ ملتان بنچ سے رجوع کیا جس پر عدالت نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب محمد ایوب خان بزدار کو طلب کیا اور کہا کے پیپرا رولز کی کھلم کھلا خلاف ورزی کی جارہی ہے ایکسیئن اپنے من پسند افراد کو کنٹریکٹ دینا چاہتا ہے جس پر انہوں نے عدالت کو مشورہ دیا کہ یہ رٹ ڈپٹی کمشنر لیہ کو بھجوا دی جائے جس پر پیٹشنر کے وکیل محمد عامر خان بھٹہ نے عدالت کو بتایا کہ ڈپٹی کمشنر لیہ کمشنر ڈیرہ غازی خان اور وزیراعلی انسپکشن ٹیم سمیت تمام متعلقہ حکام کو آگاہ کیا گیا اس لیے عدالت عالیہ  نے کمشنر ڈیرہ غازی خان کو ہدایت کی کہ وہ تمام ریکارڈ خود چیک کریں پیٹشنر کو سماعت کیا جائے متعلقہ افسران کو بھی طلب کیا جائے اور 15 روز کے اندر پراسس مکمل کرکے رپورٹ  ڈپٹی رجسٹرار جوڈیشل کو بھجوائی جائے۔ لیکن ایسا نہیں ہوا تو پیٹشنر نے دوبارہ عدالت سے رجوع کیا ہے۔

ہدایت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -