شہباز گل نے رمیش کمار سے متعلق الفاظ پر معافی مانگ لی

شہباز گل نے رمیش کمار سے متعلق الفاظ پر معافی مانگ لی
شہباز گل نے رمیش کمار سے متعلق الفاظ پر معافی مانگ لی

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہباز گل نے رمیش کمار سے متعلق ٹی وی پر کہے گئے اپنے الفاظ پر معافی مانگ لی۔

روزنامہ" جنگ" کے مطابق اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کے دوران شہباز گل نے کہا کہ میں معذرت کرتا ہوں رمیش کمار سے متعلق اپنے الفاظ واپس لیتا ہوں، رمیش کمار جو حرکتیں کررہا ہے اس پر کوئی بات نہیں کررہا، یہی الفاظ اگر انگریزی میں کہہ دیے جائیں تو کوئی اعتراض نہیں کرتا۔ اس معاملے کی وضاحت کرتے ہوئے ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ انہوں نے کل ایک ایسے  رکن اسمبلی  جس نے ایک بھی ووٹ نہیں لیا کو سیاسی دلال کہا جس پر بڑی لے دے ہوئی، انہیں لائیو ٹی وی پر یہ لفظ نہیں کہنا چاہیے تھا  اور اس کا انہیں افسوس ہے، وہ معذرت کرکے اپنا لفظ واپس لے لیتے ہیں لیکن پھر انہیں یہ بھی بتایا جائے کہ جو کچھ سندھ ہاؤس میں ہو رہا ہے اس کیلئے متبادل لفظ کیا ہوگا۔

ڈاکٹر شہباز گل نے "دلا" کی وضاحت کرتے ہوئے  کہا کہ  انہوں نے دلا کہا تو اس پر ہنگامہ ہوگیا لیکن اگر یہی لفظ وہ انگریزی میں "PIMP" کہتے تو اس پر کسی کو مسئلہ نہیں ہونا تھا۔ یہ اس وجہ سے ہے کیونکہ پنجابی ہمیں سمجھ آجاتی ہے لیکن انگریزی کی سمجھ نہیں آتی اس لیے انگریزی میں جو بھی کہہ دیا جائے اس پر ہنگامہ نہیں مچتا۔ انہوں نے "دلا" کی وضاحت کیلئے پراپرٹی ڈیلر کی مثال بھی پیش کی ۔ اس کے علاوہ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کے ایک اخبار نے پیپلز پارٹی کی جانب سے سندھ ہاؤس میں خریدو فروخت کو انگریزی میں "Political Prostitution "  (سیاسی جسم فروشی)لکھ کر لیڈ کے طور پر چھاپا ، چونکہ یہ انگریزی میں تھا تواس لیے اس پر کوئی بات نہیں ہوئی۔

شہباز گل نے کہا کہ 2018 میں راجہ ریاض کو جب ٹکٹ دیا گیا میں بنی گالہ میں موجود تھا، راجہ ریاض نے بس عمران خان کے پاؤں نہیں پکڑے تھے باقی سارے کام کیے تھے۔معاون خصوصی نے کہا کہ راجہ ریاض کی کیا حیثیت تھی، اس کو عمران خان کے نام پر ووٹ ملے، اپنے ورکرز اور عوام سے کہتے ہیں قانون کے دائرے میں رہ کر احتجاج کرنا ہے۔

شہباز گل نے کہا کہ گرفتار ارکان اسمبلی کو شخصی ضمانت پر رہا کروایا گیا ہے، قانون پر مکمل عمل درآمد ہوگا کارکنوں کو قانونی طریقے سے رہا کروایا جائے گا۔معاون خصوصی نے کہا کہ توڑ پھوڑ نہیں ہونی چاہیے، اگر ہمارے کارکنوں نے کی ہے تو تنبیہ کی جائے گی، ہم حکومت میں ہیں ہم نے ہرصورت قانون پر عمل کرنا ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -