موجودہ نظام کا باغی ہوں،شریعت کا نفاذ میری منزل ہے،سراج الحق

موجودہ نظام کا باغی ہوں،شریعت کا نفاذ میری منزل ہے،سراج الحق

اسلام آباد ( این این آئی )امیر جماعتِ اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ موجودہ نظام کاباغی ہو ں،شریعت کانافذ میری منزل ہے ،نوازشریف اور زرداری کی منزل لوٹ کھسوٹ ہے ۔ ان خیالات کا ااظہار انہوں نے اپنے اعزاز میں جماعتِ اسلامی اسلام آباد کی جانب سے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سر اج الحق نے کہا ہے کہ میں اُس نظام کی تلا ش میں ہو ں کہ اذان وزیر اعظم دے ۔ملک کا سب سے بڑا مسئلہ اچھی قیادت کا نہ ہو نا ہے بز دل حکمرانوں نے قائد کا پا کستان دو حصوں میں تقسیم کیا۔جمہو ر ریت کے دعوے داروں سے پوچھیں اپنی جماعتوں میں جمہو ریت کیوں نہیں لا تے۔ بارہ سال کے بچے کو شر یک چیئرمین بنا دیا ہے ۔پیپلز پارٹی ،مسلم لیگ ن کااحتساب نہیں کرتی اور ن لیگ پیپلز پارٹی والوں کا نہیں کر تی۔ ان سب کا کر دار اور مقاصد ایک جیسے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ یہاں غریب کے گھرغریب اور جا گیردار کے گھر میں جا گیر دار پیدا ہو رہا ہے ۔اس لئے میں اس نظام کا با غی ہوں ۔ سراج الحق نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے انتخابی مہم پر تیس تیس کروڑ خرچ کرنے والوں کو بھی پوچھا نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کمزور وزیر اعظم اور بے اختیار صدر کو اس لیے قبول کیا کہ شاید ملک میں بہتری آّسکے۔ لیکن افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ان میں اور سابقہ حکمرانوں میں کوئی فرق نہیں۔۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے اپنی ذمہ داری قبول نہیں کی۔ فخر الدین جی ابراہیم کو تو مارگلہ کا پہاڑ نظر نہیں آتا، اُسے دھاندلی کیسے نظر آتی۔ انہوں نے کہا کہ آج ہمارے پالیمنٹ کے اکثر ارکان آئین کے شق 62 اور 63 پورے نہیں اترتے۔ اگر صحیح پرکھا جائے تو آدھے اڈیالہ جیل میں ہونگے۔ قبل ازیں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے نائب امیر جماعت اسلامی میاں اسلم نے کہا کہ جس ملک میں آٹا 55، آلو 60 اور دال 160 روپے فروخت ہورہے ہوں تو وہاں مجبور اور بے بس مائیں اپنے بچوں سمیت خود کشیاں نہیں تو اور کیا کریں گی۔

مزید : صفحہ اول