۔تاریخ کا سب سے مہنگا عدالتی مقدمہ

۔تاریخ کا سب سے مہنگا عدالتی مقدمہ

نیویارک (نیوز ڈیسک) نیویارک کے رہائشی 62 سالہ ”اینٹون پوریسمیا“ نے دنیا کا مہنگا ترین عدالتی مقدمہ کرکے نئی تاریخ رقم کردی ہے۔ اس شخص نے نیویارک شہر، دو مقامی ہسپتال، مقامی سٹور، ٹرانسپورٹ اتھارٹی سمیت ان گنت لوگوں اور محکموں کے خلاف دعویٰ دائر کیا ہے۔ ”اینٹون“ کا کہنا ہے کہ مقدمے میں وکیل بھی وہ خود ہی ہوگا۔ اس کی درخواست 22 صفحات پر مشتمل ہے اور اس میں شہری حقوق کی خلاف ورزی سے لے کر اس کے قتل کی کوشش تک لاتعداد الزامات شامل ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ اسے پہنچائی جانے والی تکالیف کے عوض فریقین کے ذمے واجب الاداءرقم 2,000,000,000,000,000,000,000,000,000,000,000,000 ڈالر بنتی ہے تاہم اس کا یہ بھی کہنا ہے کہ اسے پہنچائی جانے والی بعض تکالیف ایسی ہیں کہ جن پر کوئی قیمت نہیں لگائی جاسکتی۔ اس میں کتے سے کاٹے جانے سے لے کر زخمی انگلی تک کی شکایات بھی شامل ہیں۔ ایک اخبار کا یہ بھی کہنا ہے کہ اتنی رقم تو شاید دنیا میں موجود ہی نہیں۔

مزید : صفحہ آخر