آٹھ سالہ امریکی بچہ جنسی درندہ بن گیا

آٹھ سالہ امریکی بچہ جنسی درندہ بن گیا
آٹھ سالہ امریکی بچہ جنسی درندہ بن گیا

  

اوکلاہوما (نیوز ڈیسک) امریکہ شائد دنیا کا جدید ترین ملک ہے لیکن یہ بات بھی سچ ہے کہ جتنی تیز رفتاری سے مغرب نے ترقی کی ہے اسی رفتار سے معاشرہ بھی اخلاقی گراوٹ کا شکار ہوتا گیا۔ حال ہی میں ایک امریکی سکول میں ایسا واقعہ پیش آیا کہ جس پر یقین کرنا نہایت مشکل ہے۔ ایک دس سالہ امریکی بچی نے الزام عائد کیا ہے کہ اسے اوکلاہوما سٹی کے ایچ میئر ایلمنٹری سکول میں جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور یہی نہیں بلکہ یہ زیادتی کرنے والا ایک آٹھ سالہ بچہ تھا۔ بچی کی والدہ کے مطابق وہ چھٹی کے بعد سکول کے باہر کھڑی انتظار کر رہی تھی کہ اس کی 10 سالہ بیٹی روتی اور کانپتی ہوئی باہر آئی۔ بچی نے بتایا کہ وہ واش روم استعمال کرنے گئی تھی اور وہاں موجود بہن بھائی اس پر حملہ آور ہو گئے۔ اس کی ہم جماعت نے اسے پکڑ کے رکھا اور آٹھ سالہ بھائی نے اس کا ریپ کر دیا۔ اس موقع پر پولیس کو بلا لیا گیا، میڈیکل رپورٹ کے مطابق اس کے زخم دیکھ کر یہ جنسی زیادتی کا ہی کیس لگتا ہے۔ اس واقعہ پر مقامی میڈیا اور والدین سراپا احتجاج ہیں اور بچوں کے ساتھ ساتھ سکول انتظامیہ اور اساتذہ کو بھی ذمہ دار ٹھہرایا جا رہا ہے۔

مزید : جرم و انصاف