پاکستانی لڑکیوں سے چینی باشندوں کی شادی کی تحقیقات کے دوران ایسا انکشاف کہ یقین کرنا مشکل ہوجائے 

پاکستانی لڑکیوں سے چینی باشندوں کی شادی کی تحقیقات کے دوران ایسا انکشاف کہ ...
پاکستانی لڑکیوں سے چینی باشندوں کی شادی کی تحقیقات کے دوران ایسا انکشاف کہ یقین کرنا مشکل ہوجائے 

  

لاہور(ویب ڈیسک)  مسیحی لڑکیوں سے شادی کے لیے چینی باشندوں کو عیسائیت کے جعلی سرٹیفکیٹ جاری کرنے کا انکشاف ہوا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ایف آئی اے نے چینی لڑکوں سے پاکستانی لڑکیوں کی شادیوں کے معاملات کی چھان بین کی تو معلوم ہوا کہ چینی باشندوں کو عیسائیت کے جو سرٹیفکیٹ جاری کیے گئے ان میں سے اکثریت بوگس اور جعلی نکلیں ان شادیوں میں عیسائی میرج قوانین کی بھی سنگین خلاف ورزیاں کی گئی اور یہ کام لڑکیوں کے والدین کی مکمل رضامندی کے ساتھ عمل میں لایا گیا،اس سلسلے میں ایف آئی اے نے 2 پادریوں کو گرفتار بھی کیا ہے تاہم اب ایف آئی اے نے گرفتار پادریوں سے ملنے والی دستاویزات پر اور مزید افراد کے ملوث ہونے والے پادریوں کے خلاف کارروائی روک دی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کچھ گرجا گھروں کے منتظمین نے ایف آئی اے کے اعلیٰ حکام سے اس حوالے سے بات کی ہے اور یقین دہانی کرائی ہے کہ جعلی سرٹیفکیٹ جاری کرنے میں ملوث پادریوں کے خلاف وہ ازخود کارروائی کریں گے، ایف آئی اے نے شادیوں کے معاملات کی مزید تحقیقات کے لیے سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن اف پاکستان (ایس ای سی پی) سے بھی رابطہ کیا ہے اور ان سے بھی کچھ کمپنیوں کے بارے میں معلومات مانگی ہیں جہنوں نے لاہور سمیت ملک کے دیگر ائیر پورٹس پر چینی باشندوں کو آن ارائیوال ویزا دینے کے لیٹرز جاری کیے اور پاکستان میں کمپنیوں کی رجسٹریشن ایس ای سی پی کرتا ہے۔

مزید : قومی