بھارت نے سستی دکھائی، کشمیر پرآج تک بیانیہ پیش نہ کر سکا،جنرل(ر) ہوڈا

بھارت نے سستی دکھائی، کشمیر پرآج تک بیانیہ پیش نہ کر سکا،جنرل(ر) ہوڈا

  

سرینگر (آن لائن) بھارتی فوج کے لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائرڈ)ڈی ایس ہوڈانے کہا ہے کہ بدقسمتی سے بھارت کی حکومت نے پاکستان کے پروپیگنڈے کا توڑ کرنے یا اپنا کشمیر پر بیانیہ سامنے لانے میں سستی کا مظاہرہ کیا ہے۔ ایک جانب تیز رفتار انٹرنیٹ بند ہو اور دوسری جانب مخالف مواد کا توڑ نہ ہو تو بات نہیں بن سکتی۔لوگوں کی حمایت کے بغیر کہیں کوئی مسلح شورش 30 برس تک باقی نہیں رہتی۔ بھارتی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے جنرل ڈی ایس ہوڈا نے کہا کہ وادی کشمیر میں ایک طرف کہا جاتا ہے کہ حریت پسندوں اور راشی سیاستدانوں کے حمایت یافتہ مقامی نوجوانوں نے بندوق اٹھائی ہے لیکن اس سے کشمیر میں مسئلے کی پوری تصویر بھی سامنے نہیں آتی۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر کا طویل المدتی حل تلاش کرنے کے لیے ہمیں پاکستان کی حمایت کو کمزور اور تشدد کے جاری واقعات کو قابو کرنے کی کوششیں کرنا ہوں گی۔ جنرل ہوڈا نے کہا کہ جموں و کشمیر کی عوام کو ان کے مذہبی عقائد اور ان کی تہذیبی شناخت کو لاحق کسی بھی خطرے کے حوالے سے یقین دہانی کرانا بہت اہم چیلنج ہے، پاکستان اور علیحدگی پسند مسلسل ان خدشات پر کھیلتے رہے ہیں اور دفعہ 370کے ارد گرد گھومنے والے مسائل، شہریت ترمیمی قانون اور راوں برس ماہ فروری میں دہلی میں ہونے والے تشدد نے انہیں مزید موقع فراہم کیا ہوا ہے۔ڈی ایس ہوڈا کے مطابق ایک جانب جموں و کشمیر میں بظاہر فرضی خبروں کو روکنے کے لیے، تیز رفتار انٹرنیٹ بند ہے تو دوسری جانب باقی ملک میں شدت پسند مسلم مخالف مواد کے خلاف کارروائی کیے جانے کے حوالے سے کچھ بھی نہیں کیا جارہا ہے۔

جنرل ہوڈا

مزید :

صفحہ آخر -