پشاور کے تاجروں کی جانب سے نئے ایس او پیز مکمل طور پر مسترد

پشاور کے تاجروں کی جانب سے نئے ایس او پیز مکمل طور پر مسترد

  

 پشاور (سٹی رپورٹر)پشاورکے تاجروں نے صوبائی حکومت کی جانب سے نئے ایس اوپیزکومکمل طورپرمستردکردیا انہوں نے کہاکہ حکومت تاجروں کوریلیف فراہم کرنے کی بجائے انہیں مزیدمعاشی طورپرغیرمستحکم کیاجارہاہے جوکہ کسی صورت قابل قبول نہیں ہے اسی ضمن میں گزشتہ روزتاجراتحادخیبرپختونخواکے صدرمجیب الرحمن کی صدارت میں اجلاس ہواجس میں لیاقت بازارکے صدرشوکت اللہ ہمدرد،صدرروڈکے صدرمحمدشوکت،موبائل ایسوسی ایشن کے صدرفلک نیاز،جیولرزایسوسی ایشن کے صدرنثارخان،شفیع مارکیٹ کے جنرل سیکرٹری یاسین خان،کالاباڑی بازارکے صدرظفرمنہاس،فوارہ چوک کے صدرعظیم شاہ،پشاورٹریڈسنٹرکے صدر،کنٹونمنٹ بورڈپلازہ کے صدرنصیرخان،ڈینزٹریڈسنٹرکے صدرصداقت اللہ،نوتھیہ پھاٹک کے صدرعزیزخان،لیاقت بازارکے صدرشیخ اسلم،بابائے تاجران میاں محمداختر،پختونخوادرزی ایسوسی ایشن کے صدرنذیراحمد،ٹائم سنٹرکے صدرسردارحسین،دل جان پلازہ کے صدروحیدخان،فیاض خان سیکرٹری اطلاعات شاہدخان نے شرکت کی اجلاس کے شرکاء سے اپنے خطاب میں مجیب الرحمن نے کہاکہ صوبائی حکومت نے اب نئے ایس اوپیزکے تحت ایس اوپیزپرعملدرآمدنہ کرنے پردوکان کی بجائے پوری مارکیٹ کوسیل کرنے کافیصلہ کیاہے جوکہ غلط ہے اوریہ کہ ایک دوکاندارکی سزاپوری مارکیت کودیناظلم وزیادتی ہے انکامزیدکہناتھاکہ ایک طرف حکومت تاجروں کوریلیف دینے کے بلندوبھانگ دعوے کرتی ہے تودوسری طرف تاجروں کومزیدمعاشی طورپرغیرمستحکم کیاجارہاہے کیونکہ عیدالفطرکی آمدآمدہے اوریہ کہ اب تاجربرادری عیدالفطرکے سیزن پرنظرے مرکوزکیے بیٹھے ہیں لہذاحکومت تاجروں کو24گھنتے دوکانیں کھلی رکھنے کی اجازت دے لیکن حکومت نے ایساکرنے کی بجائے ایس اوپیزکومزیدسخت کردیاہے جوکہ کسی صورت قابل قبول نہیں ہے انہوں نے کہاکہ صدرکے تمام بازاروں میں لیڈی کانسٹیبل تعینات کیے جائیں کیونکہ لیڈی کانسٹیبل کی عدم دستیابی کی وجہ سے خواتین کوخریداری کے وقت دوکانداروں کی جانب سے روکناٹوکناپختون روایت کے خلاف ہے انہوں نے کہاکہ انتظامیہ اورپولیس عیدالفطرتک دوکانداروں کے ساتھ اپنے رویے میں نرمی لائے چنانچہ عیدالفطرکے بعددوکاندارانتظامیہ اورپولیس کے ساتھ ہرقسم کاتعاون کرنے کیلئے تیارہیں اجلاس میں ختم نبوت سے متعلق عیدکے بعدتاریخی اجتماع کرنے کابھی فیصلہ کیاگیااوراجلاس کے تمام شرکاء نے کہاکہ قادیانی کافرہیں اوررہیں گے لہذاحکومت ختم نبوت کے معاملے میں ہوش کے ناخن لے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -