گیارہ سالہ بچے کے قتل میں ملوث ملزم گرفتار،قاتل کا مقتول بچے سے کیا رشتہ تھا ؟جان کر ہی روح کانپ جائے گی

گیارہ سالہ بچے کے قتل میں ملوث ملزم گرفتار،قاتل کا مقتول بچے سے کیا رشتہ تھا ...
گیارہ سالہ بچے کے قتل میں ملوث ملزم گرفتار،قاتل کا مقتول بچے سے کیا رشتہ تھا ؟جان کر ہی روح کانپ جائے گی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد کے تھانہ انڈسٹریل ایریا پولیس نے 11سالہ بچے حماد علی کے قتل میں ملوث ملزم کو ٹریس کر کے گرفتار کر لیا، بچے کے قتل میں ملو ث اس کا حقیقی ماموں نکلا اور دوران تفتیش وقوعہ بھی راولپنڈی کا پایا گیا جس کے مطابق قانونی کارروائی عمل میں لائی جارہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مورخہ14.05.2020کوتھانہ انڈسٹریل ایریا کو اطلاع موصول ہوئی کہ موٹر سائیکل پر سوار نامعلوم ملزمان نے فائرنگ کر کے 11سال حماد علی کو زخمی کر دیا ہے جس کواس کے ماموں محمد عدنان نے فوری طورپر ہولی فیملی ہسپتال منتقل کیا جو زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گیا۔ایس پی انڈسٹریل ایریا زبیراحمد شیخ نے فوری جائے وقوعہ کا دورہ کیا جبکہ ڈیڈ باڈی کو پوسٹمارٹم کے لئے پمز ہسپتال منتقل کیا۔تھانہ آئی نائن پولیس نے فوری طورپربچے کے حقیقی والد محمد وقاص کی تحریر ی درخواست پر مقدمہ نمبر 244مورخہ 15.05.2020بجرم 34/302ت پ تھانہ انڈسٹریل ایریا درج کیا۔ ڈی آئی جی آپریشنز وقار الدین سید نے وقوعہ کا فوری نوٹس لیتے ہوئے ایس پی انڈسٹریل ایریا زبیر احمد شیخ کو ملزمان کو جلد از جلد ٹریس کر کے گرفتار کرنے کے احکامات جاری کئے،ایس پی اندسٹریل ایریا نے اے ایس پی انڈسٹریل ایریا زوہیب رانجھا کی زیر نگرانی انسپکٹر عاشق حسین شاہ انچارج ہومی سائیڈ اور ا یس ایچ او تھانہ انڈسٹریل ایریا میاں خرم شہزادمعہ دیگر افسران پر مشتمل پولیس ٹیم تشکیل دی۔ پولیس ٹیم نے تفتیش کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے سیف سٹی اسلام آباد کے سی سی ٹی وی کیمروں کی ویڈیو ریکارڈنگ حاصل کی اور بچے کے ماموں محمد عدنان کے موبائل فون کا ریکارڈ حاصل کیا، محمد عدنان نے اپنے دوست سیکٹر آئی نائن فور کو ملنے جانے تھا کا بیان قلمبند کیا اور محمد عدنان سے بھی پوچھ گچھ کی گئی کہ مذکورہ اپنے گھر راولپنڈی سے فرار ہوگیا۔

حالات واقعات مشکوک ہونے اور محمد عدنان کا اپنا موبائل بند کر کے فرار ہونے پر مذکورہ کو 2دن کی تگ و دو سے گرفتار کر کے مذکورہ کو مقدمہ ہذا میں انٹیروگیٹ کیا گیا تو مذکورہ نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ وہ اپنے گھر واقع پنڈورہ راولپنڈی میں اپنے رہائشی کمرہ میں صوفہ پر بیٹھ کر اپنا پسٹل 30بور صاف کر رہا تھا کہ جس سے اچانک گولیاں چل گئیں جبکہ اسکا بھانجا کمرے کے فرش پر بچھی ہوئی رضائی پر سو رہا تھا لگ گئیں جو کہ شدید زخمی ہو گیا جس کو وہ فوراً لیکر ہولی فیملی پہنچ گیا تھا۔حماد علی چونکہ اسکی حقیقی بہن کا اکلوتا بیٹا تھا جوکہ نوکری کے سلسلہ میں گھر سے باہر تھی جس کے غم و غصہ سے بچنے کے لیے اس نے تھانہ انڈسٹریل ایریا اسلام آبا د کو جھوٹا وقوعہ بتلایا جس نے دوران تفتیش اپنے گھر واقع پنڈورہ سے پسٹل 30بور اور خون آلود رضائی جس میں گولیوں کے سوراخ بھی موجود تھے برآمد کروا دیے ہیں۔ برآمدہ پسٹل (آلہ قتل) کا الگ مقدمہ متوفی کے حقیقی ماموں محمد عدنا ن کے خلاف تھانہ نیو ٹاؤن ضلع راولپنڈی میں درج رجسٹرڈ کروادیا گیا ہے جبکہ تھانہ انڈسٹریل ایریا سے مقدمہ ہذا کی تفتیش ٹرانسفر ہو کر راولپنڈی پولیس تھانہ نیو ٹاؤن کے حوالے کی جارہی ہے جو آئندہ مکمل تفتیش کریں گے۔ ڈی آئی جی (آپریشنز) تفتیشی افسران کو نقد انعام اور سرٹیفکیٹ دینے کا اعلان کیا ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -