پی سی بی نے ریٹائرڈ کرکٹرز کی پینشن میں فی کس ایک لاکھ روپے کا اضافہ کردیا

پی سی بی نے ریٹائرڈ کرکٹرز کی پینشن میں فی کس ایک لاکھ روپے کا اضافہ کردیا
پی سی بی نے ریٹائرڈ کرکٹرز کی پینشن میں فی کس ایک لاکھ روپے کا اضافہ کردیا
سورس: PCB

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی)  نےپلیئرز ویلفیئر پالیسی کے تحت تمام کٹیگریز میں شامل کھلاڑیوں کی  پینشن میں فی کس ایک لاکھ روپے اضافے کا اعلان کردیا ۔ اس اضافے کے بعد اب 10 یا اس سے کم ٹیسٹ میچز میں  پاکستان کی نمائندگی کرنے والے ریٹائرڈ کھلاڑیوں کو ماہانہ  ایک لاکھ 42 ہزار روپے پینشن ملے گی۔ گیارہ سے 20  ٹیسٹ میچز میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے ریٹائرڈ کھلاڑی  ماہوار ایک لاکھ 48 ہزار روپے،  21 یا اس سے زائد ٹیسٹ میچز  کھیلنے والے ٹیسٹ کرکٹرز کی ماہوار پینشن ایک لاکھ 52 ہزار روپے کردی گئی ہے۔

پی سی بی ویلفیئر پالیسی میں ترمیم کے بعد اب کسی بھی سابق ٹیسٹ کرکٹر کی وفات کے بعد اس  کی پینشن اس کی اہلیہ کو  وصول کرنے کا اختیار ہوگا۔ اس سے قبل کرکٹر زکی وفات کے بعد ان کے قانونی ورثاء کو صرف ایک مرتبہ ہی پینشن وصول کرنے کا حق حاصل تھا، جو ان کی کٹیگری کی بریکٹ کے مطابق 12 ماہ کے برابر تھی۔پی سی بی کی ویلفیئر پالیسی آخری مرتبہ جنوری 2019 میں اپ ڈیٹ کی گئی تھی۔لہٰذا پی سی بی نے آئندہ مہنگائی کی شرح کے مطابق ریٹائرڈ کھلاڑیوں کی پینشن میں سالانہ اضافےکا اعلان بھی کیا ہے۔

چیئرمین پی سی بی رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ کھلاڑیوں کی پینشن  میں اضافے اورپی سی بی ویلفیئر پالیسی میں دیگر ترامیم کا اعلان کرتے ہوئے انہیں بہت خوشی محسوس ہورہی ہے۔ ایک سابق کرکٹر کی حیثیت سے پاکستان کرکٹ کے امور کی سربراہی ملنے پران سے توقع تھی کہ وہ ہمیشہ  موجودہ اور سابق کرکٹرز کے مفادات کی حفاظت اور ان کی فلاح کے لیے عملی اقدامات کریں گے ۔ انہیں  خوشی ہے کہ وہ اپنا ایک اور وعدہ  پورا کرنے میں کامیاب رہے ، ان ترامیم کے بعد  اب کھلاڑیوں کی پینشن میں سالانہ اضافہ بھی ہوا کرے گا۔

رمیز راجہ نے مزید کہا کہ پینشن میں اضافے کے علاوہ پی سی بی نےسابق  کھلاڑیوں کے انتقال کے بعد ان کی بیواؤں  کی حفاظت کو بھی یقینی بنایا ہے۔ ایک سابق کرکٹر کی حیثیت سےوہ  جانتے ہیں کہ کھلاڑیوں کے اہلخانہ کتنی قربانیاں دیتے ہیں ۔ یقین ہے کہ یہ ترامیم کرکٹرز کے ساتھ ساتھ ان کی شریک حیات کے لیے بھی اطمینان کا سبب بنیں گی۔

انہوں نے کہا کہ پی سی بی ایک ایسا ادارہ ہے جو اپنے کرکٹرز کو  قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔ پی سی بی پلیئرز ویلفیئر پالیسی میں یہ ترامیم پی سی بی کےان  عزائم کا  منہ بولتا ثبوت ہیں ۔ وہ  یقین دلانا چاہتے ہیں کہ وہ ان  کی حمایت جاری رکھیں گے ۔ اس کے علاوہ سابق کھلاڑیوں کی فلاح و بہبود کے لیے پی سی بی کا بینوولنٹ فنڈ پہلے ہی موجود ہے۔

خیال رہے کہ پی سی بی پلیئرز ویلفیئر پالیسی میں تازہ ترین تبدیلیاں یکم جولائی 2022 سے نافذ العمل ہوں گی،   60 سال یا اس سے زائد عمر کے کرکٹرز اس پالیسی سے مستفید ہو سکیں گے۔

مزید :

کھیل -