فنڈامنٹلز آف لاء، مختلف بورڈز کو میٹرک، انٹرمیڈیٹ سطح پر50نمبرز پرمشتمل نیا مضمون شامل کرنیکی تجویز بے روزگاری کا مسئلہ بھی حل ہونیکا امکان

فنڈامنٹلز آف لاء، مختلف بورڈز کو میٹرک، انٹرمیڈیٹ سطح پر50نمبرز پرمشتمل نیا ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ڈیرہ غازیخان(بیورو رپورٹ)ممبر ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن ڈیرہ غازی خان، سابق سیکرٹری و ریٹائرڈڈپٹی کنٹرولر، بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن، ڈی جی خان شیخ امجد حسین ایڈووکیٹ ہائی کورٹ نے تجویز دی ہے کہ پاکستان/ پنجاب کے تمام ایجوکیشن (بقیہ نمبر35صفحہ7پر)

بورڈز میں میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کی سطح پرفنڈامنٹلز آف لاء کے عنوان سے پچاس نمبروں پر مشتمل ایک مضمون شامل کیاجائے جس کا سلیبس پاکستان میں رائج الوقت قوانین کی چیدہ چیدہ  اہم شقوں / دفعات پر مشتمل ہو۔ علاوہ ازیں سلیبس میں شریعت لاء، تعزیرات پاکستان، سائبر کرائمز، ضابطہ فوجداری و دیوانی کے اہم نکات اور محصولات کی ادائیگیوں سے متعلق قوانین بھی شامل ہوں تاکہ نئی نسل قانون کی پاسداری اور عملداری کے ساتھ ساتھ اپنے حقوق و فرائض و ذمہ واریوں سے متعلق بھی بخوبی آگاہ ہو اور وہ مکمل نظم وضبط کے ساتھ اپنے روزمرہ کے معاملات کو جاری و ساری رکھ سکیں مزید براں شیخ امجد حسین نے ایک اور تجویز دیتے ہوئے کہا ہے کہ تمام تعلیمی بورڈز ضروری چانچ پڑتال کے بعد اعلی تعلیم یافتہ فارغ التحصیل طلباء و طالبات پر مشتمل ایک ''پول/پینل''  تشکیل دیں جنہیں بورڈز کے امتحانات اور مارکنگ کی ذمہ واریاں تفویض کی جائیں مذکورہ اقدام سے سکول/ کالجز/ ادارہ جات میں سٹاف کی کمی یا بورڈ ڈیوٹی پر مامور اساتذہ کرام ادارہ جات میں موجود نہ ہونے کی وجہ سے روزمرہ کی تعلیمی سرگر میوں میں بھی خلل نہیں پڑے گا کیوں کہ ادارہ جات میں سٹاف ہمہ وقت حاضر رہے گا اور  فارغ التحصیل تعلیم یافتہ نوجوانوں کی خدمات ہائیر کرنے سے کافی حد تک تعلیم یافتہ نوجوانوں کا  بے روزگاری کا مسئلہ بھی حل ہوجائے گااور  امتحانات کے انعقاد لئے چاق وچوبند/ مستند عملہ بھی ہر وقت دستیاب ہو گا اور بروقت مارکنگ کی تکمیل کے ساتھ کوالٹی آف مارکنگ  میں بھی بہتری آئے