ائیر کنڈیشنر کی ضرورت ختم !

 ائیر کنڈیشنر کی ضرورت ختم !

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

عالمی درجہ حرارت میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اسی لئے سائنسدانوں کی جانب سے عمارات کو توانائی استعمال کیے بغیر ٹھنڈا رکھنے کے طریقوں پر کام کیا جا رہا ہے۔ہانگ کانگ کے سائنسدانوں نے ایسی سفید ٹائلیں تیار کی ہیں جو ان کے خیال میں بتدریج ایئر کنڈیشننگ کی ضرورت کو کم یا ختم کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں۔یہ الٹرا وائٹ ٹائلیں ہانگ کانگ کی سٹی یونیورسٹی کے ماہرین نے تیار کی ہیں۔اسے Passive Radiative Cooling (پی آر سی) میٹریل قرار دیا گیا ہے جو 99.6 فیصد تک سورج کی روشنی منعکس کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں اور اس طرح کے میٹریل کے لیے ایک ریکارڈ ہے۔ سائنسدانوں کے مطابق اسے تیار کرنا آسان ہے جبکہ خرچہ بھی زیادہ نہیں ہوتا۔کسی عمارت کی چھت اور دیواروں پر ان ٹائلوں کو لگانے سے اسے ٹھنڈا رکھنے میں مدد ملتی ہے۔

تحقیقی ٹیم کا کہنا تھا کہ اس میٹریل سے سورج کی تپش سے تحفظ ملتا ہے اور بجلی کی 20 فیصد سے زیادہ بچت ہو سکتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہماری ٹائلیں بھنورے کی ایک قسم Cyphochilus سے متاثر ہو کر تیار کی گئی ہیں، جو اپنے جسم کو گرمی سے بچانے کے لیے سفید پرت سے ڈھانپ لیتا ہے۔ان ٹائلوں کو نانو سٹرکچر کی مدد سے تیار کیا گیا ہے جو سورج کی لگ بھگ 100 فیصد تپش کو منعکس کر دیتا ہے۔ماہرین نے بتایا کہ یہ ٹائلیں سورج کی تپش کو فضا میں خارج کر دیتی ہیں جس سے عمارت ٹھنڈی رہتی ہے۔ماہرین کے مطابق یہ میٹریل ایک ہزار ڈگری سینٹی گریڈ درجہ حرارت میں بھی خراب نہیں ہوتا اور ہر موسم میں کام کر سکتا ہے۔اس میٹریل کے حوالے سے تحقیق کے نتائج جرنل سائنس میں شائع ہوئے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -