دین کی بنیادی معلومات سے متعلق خصوصی کتب!

دین کی بنیادی معلومات سے متعلق خصوصی کتب!

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نام کتاب _©: بلوغ المرام/ جدید ایڈیشن( دوجلد ) 

تالیف : شہاب الدین احمد ابن حجر العسقلانی 

صفحات : 1138

ناشر _©: دارالسلام انٹرنیشنل ، لوئرمال ، نزد سیکرٹریٹ سٹاپ ، لاہور 

برائے رابطہ : 042-37324034

زیر نظر کتاب” بلوغ المرام من ادلة الاحکام “ ابو الفضل حافظ شہاب الدین احمد ابن حجر العسقلانی کی بے مثال کتاب ہے ۔فقہائے محدثین کے سلسلے میں ایک بہت بڑا اور معتبر نام نویں صدی ہجری کے امیر المو_¿منین فی الحدیث شہاب الدین ابو الفضل احمد بن علی بن محمد المعروف ابن حجر العسقلانی کا ہے جنہیں معاصرین نے حافظ مشرق والمغرب کا لقب بھی دیا ہے۔ وہ بہت بڑے مفسر ، محدث ، فقیہ ، مو_¿رخ اور ماہر لغت تھے ۔ شرعی احکام کے حدیثی دلائل پر مبنی فقہ میں ان کی مایہ ناز کتاب بلوغ المرام ہے جو صدیوں سے دنیا بھر کے اسلامی حلقوں میں معروف چلی آرہی ہے ۔ یہ کتاب ضخامت میں مختصر ہے لیکن جامعیت اور افادیت کے اعتبار سے بے نظیر ہے ۔ مسائل و احکام کا یہ نہایت اہم اور گراں قدر مجموعہ علماءاور طلباءکے لیے یکساں مفید ہے ۔ اس نامور کتاب کا اردو میں نہایت خوبصورت ترجمہ قارئین کے ہاتھوں میں ہے ۔ اگرچہ اب تک اس کتاب کے سینکڑوں تراجم شائع ہوچکے ہیں لیکن یہ ترجمہ پیش رو تمام تراجم سے یکسر مختلف اور منفرد ہے۔اس کی پہلی انفرادیت یہ ہے کہ یہ ترجمہ معروف سیرت نگار مولانا صفی الرحمن مبارک پوری رحمہ اللہ نے کیا ہے ۔ اس کتاب کی دیگر خصوصیات یہ ہیں کہ کم و بیش ہر حدیث کے نیچے پہلے لغوی تشریح پھر حاصل ِکلام کے عنوان سے شرح بھی لکھ دی گئی ہے تاکہ ہر حدیث کی وضاحت ہو جائے اور جو احکام اس حدیث سے مستنبط ہوتے ہیں ان کی تشریح اور تفہیم آسان ہو جائے۔ راویوں کے مختصر حالاتِ زندگی بھی درج کیے گئے ہیں۔حافظ ابن حجر العسقلانی نے اس کتاب میں فقہائے محدثین کے اسلوب کا تدبر انتہائی مہارت اور خوبصورتی سے کیا ہے ۔انہوں نے ہر مسئلے کو احادیث ِنبویہ کے ذریعے سے واضح کیا ہے جبکہ علماءاس کتاب کے بارے میں کہتے ہیں کہ ایک عام مسلمان احکامِ شریعت پر عمل کرنے کے لیے کوئی ایسی کتاب منتخب کرے جو مختصر ہو ، آسان ہو ، فقہی ابوا ب کے مطابق مرتب ہو ، تمام مسائل کے بارے میں مکمل رہنمائی کرتی ہو اور اس پر کسی تردّد یاذہنی تحفظ کے بغیر عمل کیا جا سکتا ہو تو اس کے لیے بلوغ المرام سب سے عمدہ انتخاب ہوگا ۔ 

....٭....٭....

نام کتاب : ابواب الصرف 

مصنف : دارالسلام ریسرچ سنٹر 

صفحات : 508

قیمت : 1530روپے 

ناشر : دارالسلام انٹرنیشنل ، لوئر مال ، نزد سیکرٹریٹ سٹاپ ، لاہور 

مسلمانوں کے ہاں عربی زبان کی ایک اہمیت کی ایک بڑی وجہ یہ ہے کہ یہ کتاب وسنت کی زبان ہے ۔ کتاب وسنت کا صحیح فہم اس وقت تک نہیں ہوسکتا جب تک عربی زبان سے واقفیت حاصل نہ کرلی جائے اور کوئی بھی زبان سیکھنے کے لیے اس کے بنیادی قواعد یعنی گرامر سے واقفیت کی اشد ضرورت ہوتی ہے ۔ عربی زبان کے دو بنیادی مضمون ہیں ایک کو ” نحو“ اور دوسرے کو ” صرف“ کہا جاتا ہے ۔ ” صرف “ کے لغوی معنی پھیرنے کے ہیں ۔ ” صرف “ میں ایک ہی مادّے سے مختلف اوزان کے تحت بیسیوں صیغے تیار کیے جاتے ہیں ۔ واحد ، تثنیہ ، جمع ، مذکر ، مو_¿نث ، مخاطب ، غائب یا متکلم کے علاوہ اسمِ فاعل ، اسمِ مفعول ، اسمِ آلہ ، اسمِ ظرف ، اور اسمِ تفضیل اور ان میں ہونے والی تعلیلیں ، اور تبدیلیاں ” علمِ صرف “ کے تحت ہی ہوتی ہیں ۔ اس طرح یہ علم علیحدہ مضمون کی حیثیت اختیار کرگیا ہے ۔ اس موضوع پر کتاب کو ” ابواب الصرف “ کے نام سے موسوم کیا جاتا ہے ۔ ” ابواب الصرف “ کے موضوع پر کئی ایک کتابیں پہلے سے موجود ہیں ۔ زیر تبصرہ کتاب اس موضوع پر ایک شاندار اور شاہکار اضافہ ہے۔ اس ایڈیشن کی خوبیاں حسب ِذیل ہیں : 

مصدری معنی کرتے ہوئے بہت احتیاط برتی گئی ہے ۔ عموماََ ابواب الصرف میں ” لازم “ کے جن ابواب کو حرفِ جر کی مدد سے متعددی بنایا جاتا ہے ان کا صلہ صرف ” با“ ہی لایا جاتا ہے ۔ حالانکہ ہر لازم فعل کا صلہ ” با“ نہیں ہوتا کسی کا صلہ ” لام “ بھی ہوتا ہے کسی کا ” عن “ کسی کا ” من “ اور کسی کا

 ” الیٰ “ ہوتا ہے ۔ زیر نظرکتاب میں اس کا خصوصی اہتمام کیا گیا ہے تاکہ غلطی سے محفوظ رہا جاسکے ۔ کتاب کے آخر میں ابواب الصرف میں موجود تمام ابواب کے مصادر ، ان کے معانی ، اور لازم ومتعدی ہونے کی نشاندہی ایک ٹیبل کی صورت میں درج کردی گئی ہے ۔ تاکہ پوری کتاب کا خاکہ ایک ہی نظر میں طالب علم کے سامنے آجائے ۔ بعض صیغے ابواب الصرف کی اکثر کتب میں غلط ہی نقل ہوتے چلے آرہے ہیں ،ان کی اصلاح کردی گئی ہے ۔ ہفت اقسام کے تمام ابواب کا احاطہ کرنے کی کوشش کی گئی۔مضاعف ، مہموز اور معتل کے ابواب میں سے ہر باب کے شروع میں ان سے متعلقہ قواعد درج کردیے گئے ہیں ۔ کلمات کے املا اور کتابت پر خصوصی توجہ دی گئی ہے ۔ کتاب کے باطنی حسن کے علاوہ ظاہری حسن کی طرف بھی بھرپور توجہ دی گئی ہے بہترین ڈیزائیننگ اورکلر طباعت نے کتاب کے حسن کو چار چاند لگا دیے ہیں ۔ 

....٭....٭....

نام کتاب : ابتدائی قواعد الصرف( ابتدائی ، اوّل ، دوئم ) 

تالیف : دارالسلام ریسرچ سنٹر 

صفحات _©: 337

قیمت : 1070روپے 

احکامِ شریعت کو سمجھنے کے لیے جہاں دیگر علوم اسلامیہ کی اہمیت مسلم ہے وہاں قرآن کی زبان جو کہ عربی زبان ہے اسے سیکھنے کے لیے ” فنِ صرف “ کو بھی بنیادی درجہ حاصل ہے ۔ جب تک کوئی شخص اس فن میں مہارتِ تامہ حاصل نہ کرلے اس وقت تک اس کے لیے علومِ اسلامیہ میں دسترس تو کجا پیشرفت ہی ممکن نہیں ۔ قرآ ن و سنت کے علوم کو سمجھنے کے لیے ” فن ِ صرف “ سے آگاہی شرط لازم ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ اہلِ علم کے ہاں اس فن کو بڑی اہمیت حاصل ہے اور اس کی تفہیم کے لیے درجہ بدرجہ مختلف ادوار میں علمائے اسلام نے اس موضوع پر گراں قدر کتابیں لکھیں اور اسے آ سان سے آسان تر بنانے کی کوششیں کی ہیں ۔ زیر نظر کتاب قواعد ا لصرف بھی اسی سلسلہ کی ایک اہم کڑی ہے ۔” قواعد النحو “ کی طرح یہ کتاب بھی تین حصوں پر مشتمل ہے ۔ یعنی حصہ ابتدائی، حصہ اوّل اور حصہ دوم ۔ اس کتاب کی چند نمایاں خصوصیات درجِ ذیل ہیں : 

فنِ صرف کے قواعد و مسائل کی آ سان اور عام فہم انداز میں توضیح وتشریح کی گئی ہے ۔ محاورات آسان اور دل نشین مثالوں سے مزین ہیں ۔ قاری کی ذہنی سطح اور استعداد کا خصوصی خیال رکھا گیا ہے۔یہ کتاب یعنی ” ابتدائی قواعد الصرف “ پہلے سے موجود فنِ صرف کی معتبر کتابوں کے انداز کو سامنے رکھ کر لکھی گئی ہے جس سے اس کتاب کی اہمیت دو چند ہوگئی ہے ۔ہر جگہ قواعد اور مثالوں کی تصحیح کا اہتمام کیا گیا ہے۔ قواعد و مسائل کے انتخاب میں راجح اور مستند اقوال کو ترجیح دی گئی ہے ۔ محل استشہاد کی الفاظ اور جداگانہ رنگوں کے ذریعے وضاحت کی گئی ہے۔مزید یہ کہ مشکل مثالوں کا سلیس اردو ترجمہ کیا گیا ہے ۔ یہ بات یقین سے کہی جاسکتی ہے کہ زیر نظر کتاب ”ابتدائی قواعد الصرف “ اپنے موضوع پر ایک لاجواب، شاندار اور آسان تر کتاب ہے جو بھی اس کتاب کا مطالعہ کرلے اور اسے اچھی طرح سمجھ لے اس کے لئے دینی کتب کو سمجھنا بہت آسان ہوجاتا ہے ۔

....٭....٭....

نام کتاب : قواعد التجوید

تالیف : استاذ القرا ءقاری محمد ادریس عاصم

 فاضل القراة العشرہ 

صفحات : 80

قیمت : 240روپے 

قرآنِ کریم کو سمجھنے اور سکھانے والے دنیا کے تمام انسانوں سے بہترین لوگ ہیں ۔ قرآنِ مجید وہ مقدس اور بابرکت کتاب ہے جس کے پڑھنے سے اجر و ثواب ملتا ہے اور اس کے مطابق زندگی بسر کرنے سے انسان جنت کا وارث بن جاتا ہے لیکن یہ انعامات تبھی حاصل ہوں گے جب قرآ نِ کریم کو اس طرح پڑھا جائے جس طرح یہ نازل ہوا ہے۔ قرآ نِ کریم کس لہجے میں کس انداز میں نازل ہوا اسے کس طرح پڑھا جائے اس سے آ گاہی دینے والے علم کو ” علم تجوید “ کہا جاتا ہے۔ دارالسلام نے ” قواعدا لتجوید “ کے نام سے ابتدائی درجے کی کتاب مرتب کی ہے۔ اس کتاب میں آسان انداز میں تجویدی قواعد کو مثالوں کے ساتھ لکھا گیا ہے۔ یہ اسلوب عوام و خواص دونوں کےلئے یکساں مفید ہے۔

تجویدی قواعد سے لوگوں کو روشناس کرانے کے لیے متعدد اہلِ علم نے بڑی شاندار کتب مرتب کی ہیں لیکن ان کتب سے استفادہ کرنے والوں کی تعداد بہت کم رہی ہے ۔ اس کی وجہ یہ نہیں کہ ان کتب میں علمی معیار کا فقدان ہے بلکہ ان کتب کا اسلوب خالصتاََ علمی ہے۔ دارالسلام نے تجویدی قواعد کو بڑے آسان اور شستہ الفاظ میں پیش کرنے کی سعادت حاصل کی ۔ نقشوں کے ذریعے وضاحت کی گئی ہے جس سے قواعد کو سمجھنا آسان ہو گیا ہے ۔ بہت ساری چیزیں ایسی ہوتی ہیں جو پڑھنے سے سمجھ میں نہیں آتیں لیکن جب نقشہ بنا کر انہیں سمجھا جاتا ہے تو بڑی آسانی سے سمجھ میں ا ٓجاتی ہیں اور اچھی طرح ذہن نشین ہو جاتی ہیں۔ تعلیم و تربیت کا یہ سائنٹیفک طریقہ ہے جو اس کتاب میں اختیار کیا گیا ہے۔ امید ہے کہ یہ کتاب خواص کے ساتھ ساتھ عام قارئین کےلئے بھی بے حد مفید ثابت ہوگی اور اس کتاب کے مطالعہ سے وہ بہتر انداز میں قرآنِ مجیدپڑھ سکیںگے۔ 

....٭....٭....

نام کتاب : مختار النحو( قرآنی مثالوں سے مزین عربی گرامر )

تالیف : مولانا مختار احمد سلفی 

صفحات : 270

قیمت :920روپے     

قرآ ن و سنت کو سمجھنے کے لیے عربی علوم میں ”فن نحو“ کو بنیادی مقام حاصل ہے ۔ جب تک کوئی شخص اس فن میں مہارتِ تامہ حاصل نہ کرلے اس وقت تک اس کے لیے علومِ اسلامیہ کو کماحقہ سمجھنا ممکن نہیں ہے۔ قرآ ن و سنت کو سمجھنے کے لیے نحو کا علم بنیاد ہے ۔ اسی کے پیش ِنظر اس فن کو بڑی اہمیت حاصل ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ مختلف ادوار میں علمائے اسلام نے اس فن کے متعلق کتابیں لکھی ہیں ۔ زیر نظر ”کتاب مختار النحو “ بھی اسی سلسلے کی ایک اہم کڑی ہے۔یہ اپنے موضوع پر نہایت ہی لاجواب اور آسان کتاب ہے۔ اس میں قرآنی مثالوں کے ذریعے علم النحو کو آسان فہم انداز میں سمجھانے کی بھرپور کوشش کی گئی ہے۔کتاب کی عبارت عام فہم ہے ۔ عربی زبان کے تمام بنیادی قواعد کو عام فہم زبان میں لکھا گیا ہے۔ ہر قانون کی توضیح مثالوں کے ذریعے کی گئی ہے ۔ کتاب ایک مقدمہ تین ابواب اور ایک خاتمہ پر مشتمل ہے ۔ پوری کتاب کو 70 اسباق پر تقسیم کیا گیا ہے۔ مقدمہ میں نحو کی بنیادی باتیں ذکر کی گئی ہیں۔ پہلا باب اسم، دوسرا باب فاعل اور تیسرا باب حرف کے بیان میں ہے۔تمام مثالیں قرآ ن و حدیث اور احادیث ِنبویہ سے ماخوذ ہیں ۔ کتاب کے آ خر میں نحو کے قوانین کو عربی عبارت پر لاگو کرنے کے لیے اجرا اور مطالعہ کا طریقہ کار بھی بتایا گیا ہے ۔ اسی طرح ہر سبق کی ایک مثال کی ترکیب کر دی گئی ہے تاکہ اس کو سامنے رکھتے ہوئے باقی مثالوں کی ترکیب کرنا آسان ہو جائے ۔ کتاب کے اسلوب کو نحو کی دوسری کتابوں کے مطابق ہی رکھا گیا ہے تاکہ قارئین کی ذہنی استعداد میں بآسانی اضافہ ہو ۔ جو قارئین محنت اور کوشش سے اس کتاب کو پوری طرح سمجھ کر پڑھیں گے وہ کافی حد تک فنِ نحو کے ابتدائی قواعد میں ماہر ہو جائیں گے اور عربی زبان کو صحیح طرح سے پڑھنے، سمجھنے ، لکھنے اور بولنے پر قادر ہوجائیں گے ان شاءاللہ ۔ 

....٭....٭....

نام کتاب : ابتدائی قواعد النحو( ابتدائی ، اوّل ، دوئم ) 

نام مو_¿لف : دارالسلام ریسرچ سنٹر 

صفحات : 366

قیمت : 1155روپے 

جیسا کہ نام سے واضح ہے کہ زیر تبصرہ کتاب ”ابتدائی قواعد النحو “ علوم نحو کے بارے میں لکھی 

گئی ہے۔ یہ کتاب بھی ابتدائی قواعد الصرف کی طرح تین حصوں پر مشتمل ہے یعنی ابتدائی ، اوّل اور دوئم۔یہ کتاب مبتدی قارئین کے لئے لکھی گئی ہے ۔قارئین کو یہ بات معلوم ہونی چاہیے کہ علمِ نحو،تمام عربی علوم و معارف کے لیے ستون کی حیثیت رکھتا ہے،اس لئے کہ تمام عربی علوم اسی کی مدد سے چہرہ کشا ہوتے ہیں ۔ حق یہ ہے کہ قرآ ن و سنت اور دیگر عربی علوم سمجھنے اور سیکھنے کے لیے علمِ نحو کلیدی حیثیت رکھتا ہے۔علمِ نحو کی مذکورہ اہمیت کے پیشِ نظر عربی فارسی اور دیگر زبانوں میں اس فن کی ایسی کتابیں لکھی گئی ہیں جو مفصل بھی ہیں ، متوسط بھی ہیںا ور مختصر بھی ہیں۔اردو زبان میں صرف ونحو کی کتابیں لکھنے کا مقصد لسانی اصول وقواعد کی تسہیل وتفہیم اور عربی زبان کی ترویج و اشاعت ہی ہے، کیونکہ فنی تعلیم کا اصول اور تجربہ ہے کہ اگر ابتدائی طور پر کوئی مضمون مادری زبان میں ذہن نشین ہو جائے تو پھر اسے کسی بھی اجنبی زبان میں تفصیل و اضافہ سمیت بخوبی پڑھا اور سمجھا جا سکتا ہے۔ زیر نظر کتاب اسی مقصد کے تحت لکھی گئی ہے ۔ اس کتاب کی چند نمایاں خصوصیات درجِ ذیل ہیں : 

قواعد و مسائل کی عام فہم اور آ سان اسلوب میں پیشکش ۔ قواعد و مسائل میں راجح قول اجاگر کرنے کا التزام ۔ قواعد اور مثالوں کی صحت و درستی کا ممکنہ حد تک اہتمام ۔ محل استشہاد کی الفاظ اور رنگوں کے ذریعے وضاحت ۔ طالبانِ علم کی آ سانی کے لیے درج کردہ مثالوں کا سلیس اردو میں ترجمہ ۔قاری کی ذہنی استعداد اور علمی درجے کا لحاظ ۔ قواعد کی تطبیق و اجرا کے لیے ہر سبق کے بعد تمرینات ۔ امید ہے کہ اس کتاب کے مطالعہ سے قارئین کے لئے عربی سمیت قرآنِ مجید اور احادیث ِنبویہ کو پڑھنا اور سمجھنا آسان ہوجائے گا، ان شاءاللہ ۔ 

٭٭٭

مزید :

ایڈیشن 1 -