جدید تحقیق میں اونٹ کے پیشاب کا انسانی صحت کیلئے ایسا بہترین فائدہ سامنے آگیا کہ سائنسدانوں کے اپنے بھی ہوش گم ہوگئے

جدید تحقیق میں اونٹ کے پیشاب کا انسانی صحت کیلئے ایسا بہترین فائدہ سامنے ...
جدید تحقیق میں اونٹ کے پیشاب کا انسانی صحت کیلئے ایسا بہترین فائدہ سامنے آگیا کہ سائنسدانوں کے اپنے بھی ہوش گم ہوگئے

  

لندن (نیوز ڈیسک) اگرچہ یہ بات سننے میں بہت ناگوار محسوس ہوتی ہے لیکن یہ حقیقت ہے کہ مشرق وسطیٰ میں لوگ اونٹ کا پیشاب صدیوں سے استعمال کر رہے ہیں کیونکہ اسے صرف بخار اور زکام جیسی بیماریوں کے لئے ہی نہیں بلکہ کینسر کا علاج بھی قرار دیا جاتا ہے۔ لوگ عموماً اس کے چند قطرے اونٹنی کے دودھ میں شامل کرکے پیتے ہیں یا بعض اوقات اسے براہ راست بھی پی لیا جاتا ہے۔

ویب سائٹ این سی بی آئی کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے اونٹ کے پیشاب کے بارے میں کئے جانے والے دعوﺅں کی تحقیق کا فیصلہ کیا تو واقعی کچھ حیرت انگیز انکشافات ہوئے۔ ان تحقیقات میں اس بات کا جائزہ لیا گیا کہ اونٹ کا پیشاب 4T1 کینسر خلیات کی نشوونما کو روکنے کی کس قدر صلاحیت رکھتا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ 4T1 خلیات کے خلاف اونٹ کے پیشاب کی سائٹو ٹاکسٹی کے شواہد مل گئے ہیں جبکہ اس کے اینٹی میٹا سٹیٹک اثرات بھی دیکھے گئے ہیں، جس کا مطلب یہ ہے کہ اونٹ کا پیشاب واقعی کینسر کے خلیات کی نشوونما کم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

ان تحقیقات میں چوہوں کے اجسام میں 4T1 خلیات داخل کرکے انہیں اونٹ کے پیشاب کی دو مختلف مقداروں پر مبنی خوراک دی گئی۔ تجربات کے اختتام میں متاثرہ چوہوں کے دونوں گروپوں میں کینسر کی رسولی کے سائز میں کمی دیکھی گئی۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ نتائج حتمی نہیں ہیں تاہم ان سے یہ ضرور ثابت ہوا ہے کہ اس موضوع پر مزید تحقیق ہونی چاہیے تاکہ وسیع تر اہمیت کی حامل معلومات حاصل کی جاسکیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس