ٹیوٹاکی گلگت بلتستان میں ووکیشنل اداروں کے قیام کیلئے سفارشات ارسال

ٹیوٹاکی گلگت بلتستان میں ووکیشنل اداروں کے قیام کیلئے سفارشات ارسال

لاہور (کامرس رپورٹر)ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ اتھارٹی (ٹیوٹا) پنجاب نے گلگت بلتستان کے 10اضلاع میں نئے فنی و ووکیشنل اداروں کے قیام اور17شعبوں میں کورسز شروع کرنے کیلئے سفارشات ارسال کر دی ہیں۔ٹیوٹا پنجاب کی سفارشات سے گلگت بلتستان میں ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ سسٹم کو فروغ ملے گا۔ ان خیالات کا اظہار چیئر پرسن ٹیوٹا عرفان قیصر شیخ نے افسران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر چیف آپریٹنگ آفیسر جواد احمد قریشی، اختر عباس بھروانہ، عامر عزیز، اظہر اقبال شاد، راؤ راشد، مقصود احمد، عائشہ قاضی، عظمی نادیہ، ڈاکٹر افتخار حسین شاہ، سرفراز انور اور دیگر افسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔عرفان قیصر شیخ نے کہا کہ حکومت گلگت بلتستان نے پنجاب حکومت کو منصوبہ بندی و ترقیات، صحت، تعلیم،فنی و ووکیشنل سیکٹر اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے شعبوں کے فروغ کے لئے تعاون کی پیش کش کی تھی۔ وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے ٹیوٹا کو فیزبیلٹی رپورٹ تیا ر کرنے کی ہدایت کی ۔

ٹیوٹا پنجاب نے ٹیکنیکل ایجوکیشن اینڈ ووکیشنل ٹریننگ سسٹم کیلئے اپنے ماہرین کی ٹیم بھیجی جن کی سفارشات کو حکو مت پنجاب نے گلگت بلتستان کو بھیج دی ہیں جن کے مطابق ہر ضلع میں نیا گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی (مردانہ)، گورنمنٹ ٹیکنیکل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ (مردانہ) اور گورنمنٹ ووکیشنل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ (زنانہ)تعمیرکرنے کے علاوہ17شعبہ جات بشمول آٹو موبائل، الیکٹریکل اینڈ الیکٹرانکس، کان کنی اور معدنیات، ٹرانزٹ ٹریڈ / خدمات، مہمان نوازی / سیاحت، صحت اور پیرامیڈکس، سول / تعمیرات،ووڈ ورکنگ ، فوڈ، زراعت اور لائیو سٹاک، میکنیکل، انفارمیشن کمیونیکیشن ٹیکنالوجی اور میڈیا، بیوٹیشن، ٹیکسٹائل اورفیشن ڈیزائننگ اور جواہرات و زیورات میں نئے کورسز شروع کئے جائیں۔چیئرپرسن ٹیوٹا نے مزید کہا کہ ٹیوٹا نے ٹی ویٹ نظام کو نافذکرنے کیلئے مناسب ڈھانچے کیلئے بھی کہا ہے ۔

یہ سفارشات پاک چائنہ اقتصادی راہداری اورسینکڑوں ہائیڈ ل پراجیکٹس کے شروع کرنے کیلئے گلگت بلتستان میں ماہر افرادی قوت کی تیاری کیلئے کی گئی ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی نوجوان بہت ذہین اور محنت کش ہیں۔ ان کو تربیت دینے کیلئے رہنمائی اور اداروں کی ضرورت ہے۔صوبہ پنجاب کی جانب سے ان اقدامات کو خوش آئند قرار دیا گیا ہے کیونکہ اس طرح پنجاب کے علاوہ دیگر صوبوں میں بھی ٹیکنیکل اور

مزید : کامرس