سول کورٹ کی لفٹ 6 ماہ سے خراب، سائلین اور وکلاء کو شدید پریشانی کا سامنا

سول کورٹ کی لفٹ 6 ماہ سے خراب، سائلین اور وکلاء کو شدید پریشانی کا سامنا

لاہور(نامہ نگار)سول کورٹ کی لفٹ 6 ماہ سے خراب ہونے کی وجہ سے سائلین اور وکلاء کو شدید پریشانی کا سامناجبکہ انتظامیہ نے بھی خاموشی اختیار کررکھی ہے جس کے باعث بزرگ سائلین کو بلڈنگ کی بالائی منزل تک جانے میں سخت تکلیف اٹھانا پڑرہی ہے،سول کورٹ ایوان عدل میں 127سول ججزاپنے فرائض انجام دے رہے ہیں۔ ایوان عدل کی عمارت 3 منزلہ ہے جہاں پر سول جج اور مسجد بلاک میں سائلین کو عدالتوں تک پہنچنے کے لئے لفٹ لگائی گئی، مسجد بلاک میں ایک لفٹ 6ماہ سے خراب ہے جس کو ابھی تک ٹھیک نہیں کرایا گیا۔ لفٹ ٹھیک نہ ہونے سے بزرگ سائل سڑھیوں میں بیٹھ بیٹھ کر 3 منزلہ عمارت تک جاتے ہیں۔بعض وکلاء جو دل کے مریض ہے ان کو دوسرے بلاک کی لفٹ استعمال کرنا پڑتی ہے۔وکلاء کے مطابق اکثر گواہ جو سڑھیوں سے عدالت تک نہیں جاسکتے۔

ان کے بیان کے لئے عدالتی اہلکاروں کو گراؤنڈ فلور پر آنا پڑتا ہے۔ وکلاء کا مزید کہنا ہے کہ لفٹ ٹھیک کرنے کے لئے کئی بار انتظامیہ کو کہا گیا لیکن ابھی تک شنوائی نہیں ہوئی جبکہ سائلین کا کہنا ہے کہ اکثر اوقات بوڑھے افراد جو سیڑھیاں استعمال نہیں کرسکتے اور لفٹ خراب ہونے کی وجہ سے انہیں بھی سخت پریشانی کا سامنا ہے لہذا انتظامیہ کو چاہیے کہ فوری طور پر اس مسئلہ کو حل کیا جائے تاکہ وکلاء اور سائلین کو درپیش مشکلات ختم ہوسکیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4